برآمدات میں نمایاں کارکردگی دکھانے والی آئی ٹی کمپنیوں کیلئے 5 فیصد نقد انعام کا اعلان

آئی ٹی انڈسٹری کو مشکلات میں تنہا نہیں چھوڑیں گے، ایف بی آر نوٹسز، فری لانسرز کیلئے فارن کرنسی اکائونٹس کھولنے میں مشکلات سمیت دیگر قانونی رکاوٹوں کے حل کیلئے وزیر خزانہ نے ضروری اقدامات کا وعدہ کیا ہے، سید امین الحق

333

اسلام آباد: وفاقی وزیر انفارمیشن ٹیکنالوجی و ٹیلی کمیونیکیشن سید امین الحق نے کہا ہے کہ آئی ٹی انڈسٹری کے ٹیکس سمیت دیگر دیرینہ اور اہم مسائل کے حل کیلئے وزیر خزانہ شوکت ترین کی جانب سے فوری اقدامات کی ہدایات جاری کی گئی ہیں اس طرح ملک کی تیزی سے ترقی کرتی انڈسٹری کی بے چینی اور مایوسیوں کا خاتمہ ہو گا۔

گزشتہ روز وفاقی وزیر سے پاکستان سافٹ ویئر ہائوسز ایسوسی ایشن (پاشا) کے وفد نے ملاقات کی، اس موقع پر پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ کے مینجنگ ڈائریکٹر عثمان ناصر، چیئرمین پاشا برکان سعید اور سیکریٹری جنرل حرا زینب شریک تھے۔

وفاقی وزیر آئی ٹی کا کہنا تھا کہ انڈسٹری کو ایف بی آر کی جانب سے بے جا ٹیکس نوٹسز کے اجراء، فری لانسرز اور سٹارٹ اپس کیلئے فارن کرنسی اکائونٹس کھولنے میں مشکلات، غیرملکی سرمایہ کار کمپنیوں کو اپنا جائز منافع ملک سے باہر لے جانے میں قانونی رکاوٹوں سمیت دیگر مسائل کے حل کیلئے وزیر خزانہ شوکت ترین نے ضروری اقدامات کا وعدہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے:

ملکی تاریخ میں پہلی بار آئی ٹی برآمدات 2  ارب ڈالر سے تجاوز کر گئیں

پاکستان کا پہلا صوبہ جہاں فائیوجی ٹیکنالوجی متعارف کرانے کیلئے عملی کام شروع ہو گیا

سید امین الحق نے بتایا کہ برآمدات میں نمایاں کارکردگی دکھانے والی آئی ٹی کمپنیوں کو پانچ فیصد نقد انعام کا اعلان کیا گیا ہے جبکہ آئی ٹی برآمدات کا ایک فیصد بطور فنڈ پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ کو دیا جائے گا۔ اس فنڈ سے سافٹ ویئر ٹیکنالوجی پارکس کے قیام، نوجوانوں کو ہنرمند بنانے کے منصوبے اور آئی ٹی انڈسٹری کے فروغ کیلئے اقدامات کیئے جائیں گے۔

واضح رہے کہ گزشتہ مالی سال 2020-21ء کے دوران پاکستان کی آئی ٹی برآمدات 47.4 فیصد اضافے سے ملکی تاریخ میں پہلی بار دو ارب ڈالر سے زائد ریکارڈ کی گئیں اور حکومت نے عزم ظاہر کیا ہے کہ انہیں پانچ ارب ڈالر تک لے جایا جائے گا۔

وفاقی وزیر آئی ٹی نے مزید کہا کہ ہم نے وعدہ کیا تھا کہ آئی ٹی انڈسٹری کو مشکلات میں تنہا نہیں چھوڑیں گے، وقت آ گیا ہے کہ سافٹ ویئر ہائوسز ملکی ترقی میں مزید فعال کردار ادا کریں، پاکستان کودنیا بھر میں برانڈ کریں کہ ہمارے ملک میں باصلاحیت ہنرمندوں اور موزوں ترین ٹائم زون و لیبر چارجز کے ساتھ دنیا کے بہترین سافٹ ویئر انجینئرز کی کمی نہیں۔

انہوں نے کہا کہ آئی ٹی کا شعبہ ملکی معیشت کے استحکام، باعزت و منافع بخش روزگارکے مواقع پیدا کرنےمیں بنیادی اہمیت رکھتا ہے، ضروری ہے کہ برآمدی ترسیلات میں ریکارڈ اضافہ کو برقرار رکھتے ہوئے پانچ ارب ڈالر کے ہدف کو پورا کرنے کی کاوشوں کو بھی تیز کیا جائے۔

اس موقع پر چیئرمین پاکستان سافٹ ویئر ہائوسز ایسوسی ایشن برکان سعید نے کہا کہ وزارت آئی ٹی کی کاوشوں کے بغیر مسائل کا حل ممکن نہیں تھا، پوری آئی ٹی انڈسٹری وفاقی وزیر آئی ٹی سید امین الحق کوخراج تحسین پیش کرتی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ آئی ٹی انڈسٹری وفاقی وزیر کی ہدایت پر تعلیمی اداروں کے اشتراک سے آئی ٹی انجینئرز اور مطلوبہ مہارت کی تربیت کے اقدامات کر رہی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here