ملکی تاریخ میں پہلی بار امریکا کو پاکستانی برآمدات 5 ارب ڈالر سے متجاوز

مالی سال 2020-21ء کے دوران امریکا کو 5.2 ارب ڈالر کی برآمدات کی گئیں جو مالی سال 2019-20ء کی 3.7 ارب ڈالر برآمدات کے مقابلہ میں 1.45 ارب ڈالر یعنی39  زیادہ ہیں، مشیر تجارت رزاق دائود

393

اسلام آباد: وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت و سرمایہ کاری عبدالرزاق دائود نے کہا ہے کہ مالی سال 2021ء میں امریکا کو پاکستانی برآمدات میں پیوستہ مالی سال کے مقابلہ میں 39 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

سوموار کو سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ مالی سال 2020-21ء کے دوران امریکا کو 5.2 ارب ڈالر کی برآمدات کی گئیں جو مالی سال 2019-20ء کی 3.7 ارب ڈالر برآمدات کے مقابلہ میں 1.45 ارب ڈالر زیادہ ہیں۔

مشیر تجارت نے کہا کہ ملکی تاریخ میں کسی ایک مالی سال کے دوران پہلی بار امریکا کو پاکستانی برآمدات کا حجم 5 ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا ہے، اس ضمن میں برآمدکنندگان اور امریکا میں ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ افسران تحسین کے مستحق ہیں۔

یہ بھی پڑھیے: 

سٹیٹ بینک نے برآمدات سے متعلق فارن ایکسچینج مینوئل میں ترامیم کر دیں

رواں سال برآمدات ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح 25.3 ارب ڈالر پر پہنچ گئیں

رزاق دائود نے برآمدات میں اضافہ کے لیے نیویارک اور ہیوسٹن کے پاکستانی مشنز میں تعینات ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ افسران کو پاکستانی برآمدکنندگان کو مزید سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت بھی کی تاکہ امریکا کو برآمدات میں مزید اضافہ کیا جا سکے۔

واضح رہے کہ رواں مالی سال 21۔2020ء کے اختتام تک پاکستان کی برآمدات 18 فیصد اضافے سے 25.3 ارب ڈالر ریکارڈ کی گئیں جو ملکی تاریخ میں اب تک کی سب سے بلند ترین شرح ہے۔ اس سے قبل 2013-14ء میں قومی برآمدات 25.1 ارب ڈالر ریکارڈ کی گئیں تھیں۔

جون 2021ء میں ہونے والی برآمدات بھی ماضی کے مقابلے میں ایک ماہ کے دوران ہونے والی سب سے بلند ترین شرح یعنی 2.7 ارب ڈالر ریکارڈ کی گئی ہیں۔ اس سے قبل ستمبر 2013ء میں ماہانہ برآمدات 2.6 ارب ڈالر ریکارڈ کی گئیں تھیں۔

رواں سال خدمات کی برآمدات 5.9 ارب ڈالر رہنے کا امکان ہے، مالی سال 2021ء کے دوران سازوسامان اور خدمات کی مجموعی برآمدات 31 ارب ڈالر کا ہندسہ عبور کر جائیں گی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here