ترسیلات زر میں 29 فیصد اضافہ، 11 ماہ میں 26.736 ارب ڈالر موصول

جولائی 2020ء سے مئی 2021ء کے دوران سعودی عرب سے 7 ارب، امارات 5 ارب 88 کروڑ، برطانیہ 3 ارب 69 کروڑ، امریکا سے 2 ارب 47 کروڑ ڈالر موصول ہوئے، سٹیٹ بینک

261

اسلام آباد: سمندر پار پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں جاری مالی سال کے 11 ماہ میں گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں ریکارڈ 29.4 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کی رپورٹ کے مطابق جاری مالی سال 2020-21ء کے 11 ماہ (جولائی تا مئی) کے دوران سمندر پاکستانیوں نے مجموعی طور پر 26 ارب 73 کروڑ 60 لاکھ ڈالر ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا ہے۔

یہ شرح گزشتہ مالی سال 2019-20ء کے 11 ماہ (جولائی تا مئی) کے مقابلہ میں 29.4 فیصد زیادہ ہے۔ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے دوران سمندر پار پاکستانیوں نے 20 ارب 65 کروڑ 90 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ ارسال کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے:

پاکستان کی معاشی بڑھوتری کی شرح 4 فیصد تک رہنے کا امکان، فوربز

پاکستان کی معاشی شرح نمو 4.6 فیصد تک بڑھنے کی توقع، نئی رپورٹ جاری

عالمی بینک، آئی ایم ایف کے تخمینے کے برعکس پاکستان کی معاشی شرح نمو 3.94 فیصد رہنے کا امکان

سالانہ بنیادوں پر جائزہ لیا جائے تو مئی 2021ء میں سمندر پار مقیم پاکستانیوں کی ترسیلات زر کا حجم دو ارب 49 کروڑ ڈالر سے زائد ریکارڈ کیا گیا جبکہ گزشتہ سال مئی میں یہ حجم ایک ارب 86 کروڑ 50 لاکھ ڈالر ریکارڈ کیا گیا تھا۔

سٹیٹ بینک کے مطابق ترسیلات زر کے حوالے سے سعودی عرب سب سے بڑے ملک کے طور پر سامنے آیا جہاں کام کرنے والے پاکستانی محنت کشوں نے مالی سال کے 11 ماہ سات ارب ایک کروڑ ڈالر سے زائد زرمبادلہ پاکستان ارسال کیا جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 19.5 فیصد زیادہ ہے۔

گزشتہ مالی سال 2019-20ء کے 11 ماہ کے دوران سعودی عرب میں کام کرنے والے پاکستانی محنت کشوں نے مجموعی طور پر پانچ ارب 86 کروڑ 50 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا تھا۔

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) دوسرا ملک رہا جہاں مقیم پاکستانیوں نے رواں مالی سال  کے 11 ماہ میں پانچ ارب 88 کروڑ 80 لاکھ ڈالر پاکستان بھیجے جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے پانچ ارب 9 کروڑ 50 لاکھ ڈالر سے 97 لاکھ ڈالر زیادہ ہیں۔

اسی طرح برطانیہ سے گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں ترسیلات زر میں 66.6 فیص اضافہ ہوا، رواں مالی سال کے 11 ماہ میں برطانیہ میں مقیم پاکستانیوں نے تین ارب 69 کروڑ 60 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ ارسال کیا جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں دو ارب 21 کروڑ 90 لاکھ ڈالر بھیجے تھے۔

امریکا ترسیلات زر کے حوالہ سے چوتھا بڑا ملک رہا جہاں کام کرنے والے پاکستانی محنت کشوں نے جاری مالی سال کے پہلے 11 ماہ میں دو ارب 47 کروڑ 70 لاکھ ڈالر زرمبادلہ ملک ارسال کیا جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 58.1 فیصد زیادہ ہے، گزشتہ مالی سال کے 11 میں امریکا سے ترسیلات زر کا حجم ایک ارب 56 کروڑ 60 لاکھ ڈالر رہا تھا۔

موجودہ حکومت کی جانب سے قانونی اور بینکنگ ذرائع سے ترسیلات زر کی حوصلہ افزائی کیلئے سہولیات اور اقدامات کے نتیجہ میں ترسیلات زر میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور رواں مالی سال کے اختتام تک ترسیلات زر کے  حجم کا اندازہ 28 ارب ڈالر لگایا گیا ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here