چین نے نیا موسمیاتی مصنوعی سیارہ خلاء میں بھیج دیا

92

بیجنگ: چین نےصوبے سیچوان کے زیچانگ سیٹلائٹ لانچنگ سنٹر سے اپنا ایک نیا موسمیاتی مصنوعی سیارہ خلاء میں بھیج دیا۔

چینی خبر رساں ادارے کے مطابق لانچنگ سنٹر کی حکام نے بتایا ہے کہ انہوں نے فینگیون فور بی (ایف وائی 4B) سیٹلائٹ کو لانگ مارچ تھری بی راکٹ کے ذریعے مقامی خلاء میں روانہ کر دیا ہے، یہ لانگ مارچ راکٹ سیریز کا 372واں مشن تھا۔

حکام کا کہنا تھا کہ مدار میں چین کا نیا موسمیاتی مصنوعی سیارہ موسمی صورت حال کا مکمل تجزیہ اور پیش گوئی کرنے کے علاوہ ماحولیاتی تبدیلی اور اس کے زمین پر اثرات کی نگرانی کے لیے استعمال ہو گا۔

یہ مصنوعی سیارہ اور راکٹ بالترتیب شنگھائی اکیڈمی آف سپیس فلائٹ ٹیکنالوجی اور چائنہ اکیڈمی آف لانچ وہیکل ٹیکنالوجی نے تیار کیا ہے۔ دونوں کا تعلق چائنا ایرو سپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کارپوریشن سے ہے۔

سیٹلائٹ پروجیکٹ کے نائب چیف ڈیزائنر جانگ ژے قانگ کا کہنا تھا کہ بی فور سیارہ مشاہدہ کرنے کی بہتر صلاحیت رکھتا ہے، یہ تصویر کی تشکیل اور نیٹ ورک کی کارکردگی کو بڑھا سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ نیا مصنوعی سیارہ پیش گوئی کرنے والوں کو شدید موسم کی حرکیات کو زیادہ لچکدار طریقے سے مشاہدہ کرنے میں مدد فراہم کرے گا جس سے کم سے کم وقت میں موسلادھار بارش اور دیگر موسمی صورت حال کی نشاندہی کرنا آسان ہو جائے گا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here