جولائی تا اکتوبر، براہ راست بیرونی سرمایہ کاری کا حجم 73 کروڑ 31 لاکھ ڈالر رہا

براہ راست سرمایہ کاری کے حوالے سے چین پہلے، مالٹا دوسرے، نیدرلینڈز تیسرے نمبر پر رہا، سب سے زیادہ ایف ڈی ۤآئی پاور سیکٹر میں آئی

240

اسلام آباد: پاکستانی معیشت پر بیرونی سرمایہ کاروں کا اعتماد بتدریج بحال ہو رہا ہے جس کا اندازہ رواں مالی سال کے ابتدائی چار ماہ کے دوران پاکستان میں کی جانے والی براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) کے حجم کو دیکھ کر ہوتا ہے۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کی رپورٹ کے مطابق جولائی تا اکتوبر 2020ء کے دوران پاکستان میں 733.1 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری آئی جبکہ گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران ایف ڈی آئی کا حجم 672 ملین ڈالر رہا تھا۔

یہ بھی پڑھیے: 

آٹوموبائل آلات کے شعبہ میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری میں 20 فیصد اضافہ

ترکی کا بڑا کاروباری گروپ پاکستانی رئیل سٹیٹ سیکٹر میں سرمایہ کاری کیلئے تیار

سات سالوں میں سی پیک منصوبوں پر کتنے ارب ڈالر سرمایہ کاری ہوئی؟

سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال، اکتوبر میں ایف ڈی آئی میں 151 فیصد اضافہ

اس طرح گزشتہ مالی سال کے ابتدائی چار ماہ کے مقابلہ میں جاری مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران ملک میں کی جانے والی ایف ڈی آئی میں 61.1 ملین ڈالر یعنی 9 فیصد سے زیادہ کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

ایس بی پی کے مطابق رواں مالی سال میں پاور سیکٹر میں سب سے زیادہ 352.3 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی، چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے تحت توانائی اور بنیادی ڈھانچہ کے شعبوں میں جولائی تا اکتوبر 2020ء کے دوران چین کی ایف ڈی آئی کا حجم 332.3 ملین ڈالر تک بڑھ گیا جبکہ گزشتہ سال یہ حجم  64.3 ملین ڈالر رہا تھا۔

براہ راست سرمایہ کاری کے حوالے سے دوسرے نمبر پر مالٹا رہا جس نے چار ماہ کے دوران سات کروڑ 40 ڈالر جبکہ تیسرے نمبر پر نیدرلینڈزنے پانچ کروڑ 15 لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری کی۔

مختلف شعبہ جات کے لحاظ سے سب سے زیادہ 35 کروڑ 23 لاکھ ڈالر براہ راست بیرونی سرمایہ کاری بجلی کے شعبے میں آئی جبکہ فنانشل بزنس میں 11 کروڑ 85 لاکھ ڈالر اور آئل اینڈ گیس ایکسپلوریشن سیکٹر میں آٹھ کروڑ 31 لاکھ ڈالر کی بیرونی سرمایہ کاری آئی۔

اسی طرح اگر بات کی جائے 2020ء کے گزشتہ 11 سالوں کی تو اس دوران پاکستان میں مجموعی طور پر 2429.84 ملین ڈالر براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری آئی جو اوسط ماہانہ لحاظ سے 220.89 ملین ڈالر بنتی ہے، اس دوران سب سے زیادہ ایف ڈی آئی دسمبر 2019 میں 493.03 ملین ڈالر جبکہ سب سے کم اگست 2020 میں 112.34 ملین ڈالر رہی۔

ایس بی پی کی رپورٹ کے مطابق جنوری 2020ء کے دوران ایف ڈی آئی کا حجم 219.63 ملین ڈالر رہا، فروری 2020ء میں 277.45 ملین ڈالر اور مارچ 2020 کے دوران 278.71 ملین ڈالر کی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کی گئی۔

اسی طرح اپریل 2020ء میں ایف ڈی آئی کا حجم 133.17 ملین ڈالر، مئی 2020ء میں 120.02 ملین ڈالر، جون 2020ء میں 174.79 ملین ڈالر کی غیر ملکی سرمایہ کاری پاکستان آئی۔

مزید برآں جولائی 2020ء کے دوران پاکستان میں 114.31 ملین ڈالر کی ایف ڈی آئی کی گئی تاہم اگست 2020ء کے دوران ایف ڈی آئی کا حجم 112.34 ملین ڈالر رہا جو گزشتہ 11 ماہ میں سب سے کم غیرملکی سرمایہ کاری ہے۔

سٹیٹ بینک کے مطابق ستمبر 2020ء کے دوران ملک میں کی جانے والی براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 189 ملین ڈالر رہا تاہم اکتوبر 2020ء کے دوران ایف ڈی آئی میں نمایاں اضافہ ہوا اور براہ راست غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 317.39 ملین ڈالر تک بڑھ گیا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here