سٹیٹ بینک نے کاروباری آسانیوں کے حوالے سے فارن ایکسچینج مینوئل میں ترمیم کر دی

فارن ایکسچینج مینوئل میں ایک نئے پیرا کے اضافے سے مجاز ڈیلرز کو زیادہ سے زیادہ دو لاکھ ڈٓالر سالانہ تک زر مبادلہ جاری کرنے کی عمومی اجازت حاصل ہو جائے گی

69

کراچی: بینک دولت پاکستان (ایس بی پی) نے پاکستان میں کاروبار کرنے کی آسانی کو مزید بہتر بنانے کی غرض سے فارن ایکسچینج مینوئل میں ترمیم کی ہے۔

توقع ہے کہ نئی ترمیم سے پاکستان میں کمپنیوں کو کسی پریشانی کے بغیر عالمی طور پر تسلیم شدہ ڈجیٹل سروس پرووائیڈر کمپنیوں سے ڈجیٹل خدمات کی خریداری کے عوض فوری ادائیگی کرنے میں مدد ملے گی۔

ایس بی پی کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق فارن ایکسچینج مینوئل میں ایک نئے پیرا کے اضافے سے مجاز ڈیلرز کو زیادہ سے زیادہ دو لاکھ ڈٓالر سالانہ تک زر مبادلہ جاری کرنے کی عمومی اجازت حاصل ہو جائے گی۔

یہ اجازت ڈجیٹل خدمات سے متعلق کمرشل ادائیگی پر پاکستان میں انکارپوریٹیڈ یا قائم شدہ ہر اس کمپنی یا فرم کے لیے ہو گی جو بنیادی طور پر سرکلر میں مذکور 62 ڈیجیٹل سروس پرووائیڈر کمپنیوں (بشمول ان سے منسلکہ اداروں) میں شامل ہیں تاہم اس حد کے اندر مجاز ڈیلرز ان ڈجیٹل سروس پرووائیڈرز کو زیادہ سے زیادہ 25 ہزار ڈالر سالانہ تک کا زرمبادلہ جاری کر سکتے ہیں جو اِن 62 کمنپیوں کی لسٹ میں شامل نہیں۔

مجاز ڈیلرز ان ادائیگیوں کے لیے اپنے کلائنٹس کو ڈجیٹل چینلز کی پیش کش کرسکتے ہیں۔  توقع ہے کہ ان عالمی کمپنیوں سے اشتہارات، ہوسٹنگ، ڈیٹا بیس، رسائی، اکاﺅنٹنگ مینجمنٹ، استعداد کاری اور کسٹمر سپورٹ وغیرہ سمیت مختلف خدمات کے حصول سے مقامی کاروباری ادارے مقامی طور پر اور بیرون ملک صارفین تک رسائی میں اضافہ کریں گے جس سے انہیں اپنی موجودگی بڑھانے اور کارکردگی میں اضافہ کرنے میں مدد ملے گی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here