ایف بی آر کی کارروائیاں، کروڑوں روپے کی ٹیکس چوری بے نقاب

156

اسلام آباد: فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کے ڈائریکٹوریٹ آف انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن لاہور اور ملتان نے دو الگ الگ کارروائیوں کے دوران 46 کروڑ روپے کی ٹیکس چوری بے نقاب کر دی۔

ترجمان ایف بی آر کی طرف سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ ٹیکس چوری کی روک تھام کیلئے جاری مہم کے سلسلے میں ڈائریکٹوریٹ آف انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن آئی آر لاہور نے فیروز والا ضلع شیخوپورہ میں واقع سٹیل مل میں چھاپہ کے دوران 40 کروڑ روپے کی ٹیکس چوری پکڑ لی۔

Image
تصویر: ایف بی آر ٹویٹر

سٹیل مل میں لوہے کے راڈ اور بلاک بنائے جا رہے تھے، ابتدائی تحقیقات کے مطابق سٹیل مل نے ایک سال کے گوشواروں میں سیلز ٹیکس اور فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی صفر ظا ہر کی تھی جبکہ سال بھر میں بھاری بجلی کی کھپت ریکارڈ ہوئی۔

دستیاب ابتدائی معلومات کی بنیاد پر اور تمام قانونی تقاضوں کو ملحوظِ خاطر رکھتے ہوئے کاروباری حدود میں چھاپہ مارا گیا اور دستاویزات کو ضبط کر لیا گیا۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ ابتدائی اندازے کے مطابق 40 کروڈ روپے کی ٹیکس چوری کی گئی جبکہ مزید تحقیقات جاری ہیں اور قانون کے مطابق چوری شدہ ٹیکس وصول کیا جائے گا۔

اسی نوعیت کے ایک اور آپریشن میں ڈائریکٹوریٹ آف انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن آئی آر ملتان نے انڈسٹریل اسٹیٹ ملتان میں واقع پولی پرو پالین بیگ تیار کرنے والے یونٹ کے خلاف سیلز ٹیکس ایکٹ 1990ء کی شق 38 اور 40 کے تحت کاروائی کی۔

Image
تصویر: ایف بی آر ٹویٹر

کاغذات کی جانچ پڑتال پر معلوم ہوا کہ اس یونٹ کو ایف بی آر نے بلیک لسٹ کر رکھا تھا، اس کے باوجود یونٹ بڑے پیمانے پر کافی عرصے سے کام کر رہا تھا اور اپنا سیلز ٹیکس نمبر بحال نہیں کروایا۔

ایف بی آر ترجمان کے مطابق کارروائی کے دوران بھاری مقدار میں متعلقہ ریکارڈ برآمد ہوا ہے اور ابتدائی اندازے کے مطابق چھ کروڑ روپے کی ٹیکس چوری کی گئی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here