سی پیک کا ایک اور منصوبہ مکمل، 660 کے وی مٹیاری لاہور ٹرانسمیشن لائن کمرشل بنیادوں پر فعال

250

اسلام آباد: چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے فلیگ شپ منصوبے 660 کے وی ہائی وولٹیج مٹیاری لاہور ٹرانسمیشن لائن نے کمرشل بنیادوں پر بجلی کی ترسیل شروع کر دی۔

نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی لمیٹڈ (این ٹی ڈی سی) اور پاک مٹیاری لاہور ٹرانسمیشن لائن کمپنی (پی ایم ایل ٹی سی) کے مابین طے شدہ ٹائم لائن کے مطابق ہائی وولٹیج ترسیلی لائن کے کمرشل آپریشن ڈیٹ (COD) کے حصول سے پہلے مختلف وولٹیج لیولز پر آٹھ کامیاب ٹیسٹ کئے گئے۔

ان میں پاور ٹیسٹ میں کمیشننگ ٹیسٹ (ڈی سی سٹیشن ٹیسٹ) لاہور، کمیشننگ ٹیسٹ (ڈی سی سٹیشن ٹیسٹ) مٹیاری، مونو پول لو پاور سسٹم ٹیسٹ (400 میگاواٹ تک)، بائی پول لو پاور سسٹم ٹیسٹ (800 میگاواٹ تک بائی پول)، مونو پول ہائی پاور ٹیسٹ (2200 میگاواٹ )، بائی پول ہائی پاور ٹیسٹ زیادہ سے زیادہ دستیاب پاور، سپیشل آپشنل ٹیسٹس (آنر انجینئر کے ذریعہ تجویز کردہ) جبکہ آخری ٹیسٹ یعنی ٹرائل آپریشن (168 گھنٹے) اور صلاحیت کا ٹیسٹ (06 گھنٹے) کامیابی سے مکمل ہو چکا ہے۔

اس سلسلے میں واپڈا ہائوس لاہور میں ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں منیجنگ ڈائریکٹر این ٹی ڈی سی انجینئر اعزاز احمد اور پاک مٹیاری لاہور ٹرانسمیشن لائن کمپنی کی چیف ایگزیکٹو آفیسر مس ژانگ لی (Zhang Lei) نے شرکت کی جبکہ دونوں کمپنیوں کے دیگر افسران بھی اس موقع پر موجود تھے۔

منیجنگ ڈائریکٹر این ٹی ڈی سی انجینئر اعزاز احمد نے منصوبے کی بر وقت تکمیل پر چینی کمپنی کو سراہتے ہوئے کہا کہ نئی ہائی پاور لائن کی وجہ سے این ٹی ڈی سی کے ترسیلی نیٹ ورک میں مزید استحکام آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ 878 کلومیٹر چار ہزار میگاواٹ کا منصوبہ پاک مٹیاری لاہور ٹرانسمیشن کمپنی (پرائیویٹ) لمیٹڈ نے 25 سال کی مدت کےلئے بلٹ اون آپریٹ ٹرانسفر (BOOT) کی بنیاد پر مکمل کیا گیا ہے۔ اس منصوبے سے ملک کے جنوبی حصوں میں واقع بجلی گھروں سے بجلی کی ترسیل کی جائے گی۔

واضح رہے کہ وفاقی کابینہ اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) نے 25 جولائی 2017ء کو سیکورٹی پیکج دستاویزات یعنی نفاذ کا معاہدہ (ایل اے) اور ٹرانسمیشن سروسز معاہدہ (ٹی ایس اے) کی منظوری دی تھی جو بعد میں 14 مئی 2018ء کو عمل میں لائی گئی۔

معاہدے کے تحت این ٹی ڈی سی ٹرانسمیشن لائن کے آپریشن اور دیکھ بھال کی ذمہ دار ہو گی۔ ایچ وی ڈی سی ٹیکنالوجی ملک کے قومی گرڈ میں ایک پہلا اضافہ ہے جو دنیا بھر میں طویل عرصے سے وسیع پیمانے پر استعمال ہو رہی ہے۔

یہ منصوبہ این ٹی ڈی سی کےلئے ایک سنگ میل ہے جو این ٹی ڈی سی مشن کے مطابق ایک قابل اعتماد، موثر اور مستحکم قومی گرڈ میں معاون ثابت ہو گی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here