پاکستان کاروباری ماحول کی بہتری کے لحاظ سے صف اول کے 10 ممالک میں شامل

423

اسلام آباد: چائنا اکنامک نیٹ (سی ای این) کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کاروباری ماحول کی بہتری اور آسانی کے حوالے سے صف اول کے دس ممالک میں شامل ہو گیا ہے۔

اس حوالے سے چین کے بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے پر سرمایہ کاری کے تحفظ کے حوالے سے سالانہ رپورٹ چائنا بیلٹ اینڈ روڈ تھنک ٹینک کوآپریشن الائینس، بیجنگ انٹرنیشنل سٹڈیز یونیورسٹی اور دیگر اداروں کے اشتراک سے مرتب کی گئی ہے۔

اس رپورٹ میں بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو (بی آر آئی) سے منسلک ممالک میں سیاسی، معاشی، معاشرتی، ثقافتی اور ماحولیاتی سرمایہ کاری پر تحقیق کے ثمرات پیش کیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے: 200 غیرملکی سرمایہ کاروں کی تنظیم کا پاکستان میں کاروبار کیلئے سکیورٹی صورتحال پر اظہار اطمینان

رپورٹ کے مطابق پاکستان نے حالیہ برسوں میں ترجیحی پالیسیوں کا ایک سلسلہ نافذ کرتے ہوئے کمپنی شروع کرنے سے لے کر تعمیرات میں اجازت نامے (این او سیز) کے حصول کو آسان بنانے کے لئے بے شمار اصلاحات متعارف کرائی ہیں۔

ان اقدامات کے نتیجے میں غیرملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کی صلاحیت میں بہتری آئی ہے اور سال بہ سال کاروبار کرنے میں آسانی کو تقویت ملی ہے جس سے پاکستان کاروباری ماحول کی بہتری کے ساتھ دنیا کی پہلی 10 معیشتوں میں شامل ہوگیا ہے۔

پولیٹیکل سکیورٹی کے حوالے سے اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مجموعی طور پر جنوبی ایشیا سپر پاور گیم سے بہت متاثر ہے۔ چین، امریکا، روس، جاپان اور خطے سے باہر دیگر ممالک کے یہاں تاریخی تعلقات اور عملی تعاون موجود ہے جس کی وجہ سے جنوبی ایشیا کا جغرافیائی اور سیاسی ماحول پیچیدہ بن جاتا ہے۔

پاکستان اور بھارت کے مابین ایک طویل عرصے سے جاری تنازعے نے خطے میں سیاسی سلامتی پر دبائو میں بھی اضافہ کر دیا ہے جس کے تحت کشمیر کے تنازع کی وجہ سے جنگ ایک دیرینہ خطرہ ہے۔

معاشی تحفظ کے نقطہ نظر سے پاکستان کے معاشی تحفظ کی شرح 2010ء کے مقابلے میں 2019ء میں 220 فیصد تک بڑھ گئی جس میں مجموعی طور پر نمو کا رجحان ظاہر کیا گیا ہے۔

اسی طرح رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کی تعمیر نے پاکستانی عوام کے اعتماد، گھریلو طلب کو تحریک دینے اور پیداوار کو بہت حد تک بڑھا دیا ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here