کابینہ نے ملک کی پہلی سائبر سیکیورٹی پالیسی کی منظوری دیدی

309

اسلام آباد: وفاقی وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اینڈ ٹیلی کمیونیکیشن نے ملک کی پہلی سائبر سیکیورٹی پالیسی تیار کر لی جسے وفاقی کابینہ نے متفقہ طور پر منظور کر لیا ہے۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر آئی ٹی سید امین الحق نے کہا کہ دنیا کی ایک بڑی آبادی اپنے معاشی، اقتصادی اور پیشہ ورانہ امور کو سائبر سپیس استعمال کرتے ہوئے ڈیجیٹل طریقے سے چلا رہی ہے لیکن اس کے ساتھ جرائم بھی پنپ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل سسٹم کے بڑھتے استعمال کے ساتھ اس میں کچھ ناپسندیدہ مواد اور سائبر کرمنلز شامل ہوتے جا رہے ہیں جو عوام اور سرکاری و نجی اداروں کا ڈیٹا چوری کرنے سے لے کر انہیں نقصان پہچانے تک کے ذمہ دار ہیں۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ سائبر سیکیورٹی پالیسی کے اہم نکات میں سائبر ایکو سسٹم کے تحفظ کیلئے تمام سرکاری و نجی اداروں میں اندرونی فریم ورک کیا جائے گا اور گورننس کے قیام کیلئے معاونت کی جائے گی۔

سید امین الحق نے کہا کہ نیشنل انفارمیشن سسٹم اور انفارمیشن انفراسٹرکچر کی سکیورٹی، تمام قومی آئی سی ٹی انفراسٹرکچرز میں ’پروٹیکشن اور انفارمیشن شیئرنگ میکینزم‘ کے ذریعے ہر سطح پر سائبر حملوں سے تحفظ  یقینی بنانا بھی اس پالیسی کا حصہ ہے۔

اس کے علاوہ سائبر کرائم کی مانیٹرنگ اور بروقت نشاندہی، آن لائن جرائم سے تحفظ اور بروقت ضروری اقدامات بھی اس پالیسی میں شامل ہیں، ایسے تمام اداروں کو آن لائن پرائیویسی کے تحفظ کیلئے مطلوبہ سسٹم اور معاونت کی فراہمی ممکن بنائی جائے گی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here