کابینہ نے عمر حبیب لودھی کو دوبارہ ایم ڈی یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن تعینات کر دیا

212
عمر حبیب خان لودھی، منیجنگ ڈائریکٹر یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن آف پاکستان (تصویر: ریڈیو پاکستان)

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے عمر حبیب لودھی کو دوبارہ منیجنگ ڈائریکٹر یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن آف پاکستان تعینات کرنے کی منظوری دے دی۔

گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس کے دوران بتایا گیا کہ کہ یوٹیلیٹی سٹور کارپوریشن کوماضی میں مالی خسارے کا سامنا رہا تھا تاہم موجود حکومت کی کوششوں کے نتیجے میں یوٹیلیٹی سٹورز کی سیل 10 ارب روپے سالانہ سے بڑھ کر 100 ارب تک چلی گئی ہے اور ادارہ منافع کما رہا ہے۔

وفاقی کابینہ نے عمر لودھی کی بطور ایم ڈی یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن دوبارہ تعیناتی کی منظوری دی، وہ گزشتہ دو سال سے مینجنگ ڈائریکٹر کے عہدے پر ذمہ داریاں سر انجام دے رہے تھے اور مئی 2021ء میں ان کی مدت مکمل ہوئی تھی۔

رواں سال وفاقی حکومت نے رمضان المقدس کے دوران سات ارب 80 کروڑ روپے کا ریلیف پیکج دیا تھا جس کے تحت یوٹیلیٹی سٹورز نے 19 اشیائے خورونوش پر خصوصی رعایت دی تھی، رمضان میں یوٹیلیٹی سٹورز نے تقریباََ 26 ارب روپے کی مجموعی فروخت کی اور ایک کروڑ 10 لاکھ گھرانوں کو رعایتی نرخوں پر اشیائے خوراک کی فراہمی ممکن بنائی۔

سابق چیئرمین اور سی ایف او کے ساتھ اختلافات

یاد رہے کہ عمر لودھی کے اپنے گزشتہ دو سالہ دورِ ملازمت میں یوٹیلٹی سٹورز کارپوریشن کے چیف فنانشل آفیسر (سی ایف او) اور سابق چئیرمین کے ساتھ مالی بے ضابطگیوں اور اختیارات کے ناجائز کے حوالے سے شدید اختلافات رہے ہیں۔

کارپوریشن کے سی ایف او حمود الرحمان نے بورڈ آف ڈائریکٹرز کو عمر لودھی کی قواعد و ضوابط کی خلاف ورزیوں اور مالی بے ضابطگیوں کے حوالے سے خط لکھا تھا۔

خط میں کہا گیا تھا کہ “بورڈ نے جولائی 2019ء میں منعقدہ 151ویں اجلاس میں طے کیا تھا کہ ہیڈ آفس، زونز اور ریجنز میں اکاؤنٹس اور فنانس سٹاف کی بھرتی سی ایف او کی تجویز کے تحت ہونا ضروری ہے لیکن آٹھ کے قریب منظورِ نظر عہدیداروں کے تبادلے اور تقرریاں سی ایف او کی اجازت کے بغیر کیے گئے۔”

سی ایف او حمود الرحمان ںے مزید انکشاف کیا کہ ایم ڈی کو سکیل ایم پی- وَن کے تحت بھرتی کیا گیا تھا لیکن عمر لودھی نے ناصرف عہدے سے زیادہ مراعات اور الاؤنسز لیے بلکہ سرکاری وسائل کو ذاتی مفاد کے لیے استعمال کیا اور تین گاڑیاں ان کے زیر استعمال ہیں جو سراسر غیرمنصفانہ اور غیرقانونی عمل ہے۔

واضح رہے کہ سابق چئیرمین یوٹیلیٹی سٹورز کارپوریشن ذوالقرنین علی خان اور ایم ڈی عمر لودھی نے ایک دوسرے پر بدعنوانی، مالی بے ضابطگیوں اور اختیارات کے ناجائز استعمال کے الزامات عائد کیے تھے او انہی الزامات کی وجہ سے سابق چئیرمین کو مستعفی ہونا پڑا تھا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here