’موبائل کمپنیاں صارف کی مرضی کیخلاف سروس ایکٹو کرکے قانون کی خلاف ورزی میں ملوث‘

سیلولر کمپنیاں صارفین کو ویلیو ایڈڈ سروسز فعال کرنے کیلئے لازمی توثیقی پیغامات بھیجیں تاکہ صارف کی واضح رضامندی حاصل کی جا سکے، پی ٹی اے

143

اسلام آباد: پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) نے صارفین کی مرضی کے خلاف ویلیو ایڈڈ سروس ایکٹو (فعال) کرنے کا نوٹس لیتے ہوئے اسے قانون کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

پی ٹی اے کو صارفین کی جانب سے شکایات موصول ہوئیں تھیں کہ بعض اوقات موبائل آپریٹرز صارفین کی پیشگی رضامندی کے بغیر تھرڈ پارٹی مواد، گیمز، تشہیری میسجز سمیت دیگر ویلیو ایڈڈ سروس فعال کر دیتے ہیں۔

ایسی سروسز کی وجہ سے ناصرف صارفین کو لاعلمی میں بیلنس سے ہاتھ دھونا پڑتے ہیں بلکہ تھرڈ پارٹی مواد کی وجہ سے ان کی موبائل ڈیوائسز ہیکنگ کے خطرے سے بھی دوچار ہو جاتی ہیں۔

اکثر صارفین نے پی ٹی اے کو یہ بھی شکایت کی کہ سیلولر کمپنی کی جانب سے سم پر ایسی سروس کی  مد میں بھی بیلنس کاٹ لیا جاتا ہے جو صارف نے کبھی خود ایکٹو ہی نہیں کی ہوتی اور اسے سروس کی فعالیت کے بارے میں علم تک نہیں ہوتا۔

پی ٹی اے نے اس طرح کی شکایات کا سنجیدگی سے نوٹس لیا ہے کیونکہ صارفین کی واضح رضامندی کے بغیر کسی ویلیو ایڈڈ سروس کو فعال کرنا ٹیلی کام کنزیومر پروٹیکشن ریگو لیشنز 2009ء کی صریح خلاف ورزی ہے۔

اتھارٹی کی جانب سے سیلولر کمپنیوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے صارفین کو ویلیو ایڈڈ سروسز فعال کرنے کیلئے لازمی توثیقی پیغامات بھیجیں تاکہ صارف کی واضح رضامندی حاصل کی جا سکے۔

ٹیلی کام آپریٹرز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ پی ٹی اے کی جانب سے ان احکامات کے جاری ہونے کے تین ہفتوں کے اندر اندر رپورٹ جمع کرائیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here