‘آڈٹ کا نظام بہتر بنانے کیلئے ٹیکنالوجی استعمال کرنا ہو گی’

بدعنوانی کے خاتمے اور شفافیت برقرار رکھنے کیلئے پورے آڈٹ عمل کو کمپیوٹرائز کرنا ہو گا: صدر مملکت عار ف علوی کی  آڈیٹر جنرل آف پاکستان جاوید جہانگیر سے گفتگو

153

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے آڈیٹر جنرل آف پاکستان پر زور دیا ہے کہ مالی انتظام اور خدمات کی فراہمی میں بہتری کیلئے عالمی معیار کے مطابق ٹیکنالوجی کو استعمال کرتے ہوئے آڈٹ کے نظام کو مستحکم بنایا جائے۔

بدھ کو صدر مملکت عارف علوی سے آڈیٹر جنرل آف پاکستان جاوید جہانگیر نے ملاقات کی، آڈیٹر جنرل نے صدر مملکت کو ادارے میں اصلاحات کے عمل پر بریفنگ دی اور سرکاری اداروں میں مالی شفافیت یقینی بنانے، احتساب میں اضافہ اور آڈٹ میں بہتری کیلئے کئے گئے اقدامات کو اجاگر کیا۔

بریفنگ میں مشیر برائے ادارہ جاتی اصلاحات و کفایت شعاری ڈاکٹر عشرت حسین نے بھی شرکت کی۔ اس موقع پر ایڈیشنل آڈیٹر جنرل آف پاکستان فرخ حمید اور سینئر جوائنٹ سیکرٹری وزارت خزانہ عامر محمود حسین بھی موجود تھے۔

صدر مملکت نے کہا کہ بہتر مالیاتی انتظام اور خدمات کی فراہمی کیلئے آڈیٹر جنرل آف پاکستان کے ادارے کو جدید ٹیکنالوجی اپنانا ہو گی، بدعنوانی کے خاتمے اور شفافیت برقرار رکھنے کیلئے پورے آڈٹ عمل کو کمپیوٹرائز کرنا ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ آڈٹ کے عمل کو مستحکم کرنے کیلئے بین الاقوامی معیارات اپنانے کی ضرورت ہے، پیشہ وارانہ مہارت اور بہتر گورننس کیلئے اِدارے کے اندرونی ضابطے میں بہتری لائی جائے۔

صدر نے کہا کہ ادارے کے حکام کی استعداد کار بڑھانے کیلئے خصوصی تربیت کا اہتمام کرنے کی ضرورت ہے، اصلاحات کے عمل کی تکمیل کیلئے وقت مقرر کیا جائے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here