گزشتہ دس سالوں میں پاکستان کی مجموعی برآمدات281  ارب ڈالر، ترسیلات زر 182 ارب ڈالر رہیں

سب سے زیادہ برآمدات 2013ء میں 30.70 ارب ڈالر کی گئیں، 2020ء میں سب سے زیادہ 23.12 ارب ڈالر کی ترسیلات زرموصول ہوئیں: رپورٹ

105

اسلام آباد: سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) اور عالمی بینک کے اعداد وشمار کے مطابق گزشتہ دس سالوں کے دوران پاکستان کی مجموعی برآمدات کا مالیاتی حجم 281.91 ارب ڈالر رہا جبکہ اسی عرصہ میں ترسیلات زر کی وصولیاں 182.98 ارب ڈالر رہیں۔

سٹیٹ بینک کے مطابق گزشتہ 10 سالوں کے دوران سب سے زیادہ برآمدات مالی سال 2013ء میں کی گئیں اور دوران سال برآمدات کا حجم 30.70 ارب ڈالر رہا تھا۔

اس طرح دس سالوں کے دوران مالی سال 2020ء میں سب سے زیادہ 23.12 ارب ڈالر کی ترسیلات زرموصول ہوئیں۔

رپورٹ کے مطابق گزشتہ دس سالوں میں سب سے کم برآمدات مالی سال 2017ء میں کی گئیں جن کا حجم 25.15 ارب ڈالر رہا جبکہ سب سے کم ترسیلات زر مالی سال 2011ء میں 12.23 ارب ڈالر وصول ہوئیں۔

اعداد وشمار کے مطابق مالی سال 2011ء میں برآمدات کا حجم 29.83 ارب ڈالر اور ترسیلات زر کا حجم 12.23 ارب ڈالر رہا۔

اسی طرح مالی سال 2012ء کے دوران برآمدات 27.82 ارب ڈالر اور ترسیلات زر 13.98 ارب ڈالر، مالی سال 2013ء میں برآمدات 30.70 ارب ڈالر، ترسیلات زر 14.59 ارب ڈالر، مالی سال 2014ء کے دوران برآمدات سے 29.92 ارب ڈالر اور ترسیلات زر 17.21 ارب ڈالر رہیں۔

مالی سال 2015ء میں برآمدات کا حجم 28.69 ارب ڈالر، ترسیلات زر کا حجم 19.25 ارب ڈالر، مالی سال 2016ء میں برآمدات 25.48 ارب ڈالر، ترسیلات زر 19.73 ارب ڈالر، مالی سال 2017ء میں برآمدات 25.15 ارب ڈالر، ترسیلات زر 19.71 ارب ڈالر رہیں۔

مالی سال 2018ء میں برآمدات 28.22 ارب ڈالر، ترسیلات زر 21.04 ارب ڈالر، مالی سال 2019ء کے دوران برآمدات 28.15 ارب ڈالر، ترسیلات زر 22.12 ارب ڈالر جبکہ مالی سال 2020ء کے دوران برآمدات کا حجم 27.95 ارب ڈالر اور ترسیلات زر کی وصولیاں 23.12 ارب ڈالر رہیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here