لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت کو شوگر ملز سے چینی کا سٹاک اٹھانے سے روک دیا

191

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت کو شوگر ملز سے چینی کا سٹاک زبردستی اٹھانے اور مالکان کے خلاف تادیبی کارروائی سے تاحکم ثانی روک دیا۔

لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے تحریک انصاف کے سینئر رہنما جہانگیر ترین کی جے ڈی ڈبلیو شوگر ملز سمیت دیگر شوگر ملوں کی درخواستوں پر سماعت کی۔

جسٹس ساجد محمود نے کیس مزید سماعت کے لئے جسٹس شاہد جمیل خان کی عدالت کو بھجوا دیا اور قرار دیا کہ جسٹس شاہد جمیل خان شوگر ملز کے کیسز سن رہے ہیں، مناسب ہے یہ کیس بھی فاضل جج ہی سنیں۔

درخواست گزار نے بتایا کہ ہائیکورٹ کے حکم پر معاملہ سیکرٹری خوارک کے پاس زیر سماعت ہے، اس کے باوجود ڈی سی نے حکم جاری کر دیا جس پر 1288 میٹرک ٹن چینی شوگر ملز سے اٹھانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا، ڈی سی کا نوٹیفکیشن غیرقانونی ہے۔

درخواستگزار نے استدعا کی کہ عدالت اس امر کا نوٹس لے اور ڈپٹی کمشنر کے شوگر ملز سے زبردستی چینی اٹھانے کے احکامات کو کالعدم قرار دے۔

اس پر عدالت نے قرار دیا کہ متعلقہ حکام شوگر ملوں کے خلاف کارروائی نہ کریں، پرسوں تک انتظار کریں عدالت جو حکم دے گی اس حکم پر عمل درآمد کیا جائے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here