بجٹ میں پنجاب حکومت نے لاہور کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے کتنے فنڈز مختص کیے؟

شاہ کام چوک، گلاب دیوی ہسپتال انڈر پاس اور شیراں والا گیٹ اوور ہیڈ برج پر کام جاری، سرفیس واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ کیلئے ڈیڑھ ارب روپے مختص، رواں سال ایک ہزار بستروں کے جدید ترین ہسپتال کی تعمیر شروع کی جائے گی

305

لاہور: پنجاب حکومت نے آئندہ مالی سال 2021-22ء کے بجٹ میں لاہور کی مرکزی اور تجارتی اہمیت کے پیش نظر ترقیاتی منصوبوں کے لئے 28 ارب 30 کروڑ روپے کی خطیر رقم مختص کی ہے جس کے تحت شہر میں انفراسٹرکچر کے میگا پروجیکٹس لگائے جائیں گے۔

وزیر خزانہ مخدوم ہاشم جواں بخت نے بجٹ تقریر میں بتایا کہ لاہور میں اس وقت اہم منصوبوں میں شاہ کام چوک، گلاب دیوی ہسپتال انڈرپاس اور شیراں والا گیٹ اوور ہیڈ برج شامل ہیں۔

لاہور شہر میں پانی کی شدید قلت کو مدنظر رکھتے ہوئے سرفیس واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ لگایا جا رہا ہے جس کے لیے آئندہ مالی سال میں ایک ارب 50 کروڑ روپے سے زائد رقم مختص کی گئی ہے۔

یہ بھی پڑھیے: پنجاب کا 2 ہزار 653 ارب روپے کا بجٹ پیش، کس شعبے کیلئے کتنے فنڈز مختص کیے گئے؟

انہوں نے کہا کہ لاہور میں آخری بڑا جنرل ہسپتال 1984ء میں تعمیر ہو، موجودہ حکومت رواں سال ایک ہزار بستروں پر مشتمل جدید ترین ہسپتال کی تعمیر کا آغاز کرنے جا رہی ہے۔

صوبائی وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ لاہور کے مستقبل کی ضروریات کے مد نظر رکھتے ہوئے راوی اربن پروجیکٹ اور سنٹرل بزنس ڈسٹرکٹ جیسے فقیدالمثال منصوبے شروع کئے جا رہے ہیں جن کی بدولت یہ تاریخی شہر آنے والے وقت میں خطے کا ترقی یافتہ ترین شہر بن جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ یہ منصوبے نا صرف لاہور بلکہ پنجا ب میں ترقی اور خوشحالی کے سنہر ی دور کا سنگِ میل ہوں گے۔ ایک اندازے کے مطابق صرف سنٹرل بزنس ڈسٹرکٹ کے قیام سے چھ ہزار ارب روپے کی معاشی سرگرمیاں پیدا ہوں گی اور ایک لاکھ سے زائد روزگار کے مواقع دستیاب ہوں گے۔

واضح رہے کہ پنجاب نے آئندہ مالی سال 2021-22ء کیلئے دو ہزار 653 ارب روپے مالیت کا بجٹ پیش کیا ہے جس میں آئندہ مالی سال کیلئے 405 ارب روپے ٹیکس ہدف مقرر کیا گیا ہے جبکہ جاری اخراجات کا تخمینہ ایک ہزار 428 ارب روپے لگایا گیا ہے، ترقیاتی پروگرام کیلئے 560 ارب روپے، صحت کے شعبہ کیلئے 370 ارب روپے اور تعلیم کیلئے 442 ارب روپے کا بجٹ رکھا گیا ہے۔

اسی طرح بجٹ میں جنوبی پنجاب کیلئے 189 ارب روپے مختص کئے جا رہے ہیں، سرکاری ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں 10 فیصد اضافہ کیا جائے گا، ترقیاتی بجٹ میں سوشل سیکٹر تعلیم اور صحت کیلئے 205 ارب 50 کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں۔ این ایف سی ایوارڈ کے تحت پنجاب کو ایک ہزار 684 ارب روپے ملیں گے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here