این سی او سی: تمام سرکاری ملازمین کیلئے 30 جون تک ویکسی نیشن کرانا لازمی قرار

11 جون سے 18 سال سے زائد عمر کے افراد واک اِن ویکسی نیشن کرا سکیں گے، 15 جون سے کاروباری بندش ہفتے میں ایک دن کر دی جائے گی جبکہ ورک فراہم ہوم کی پالیسی ختم کرتے ہوئے دفاتر میں 100 فیصد ملازمین کی حاضری کی اجازت دیدی گئی ہے

82

اسلام آباد۔: نیشنل کمانڈ اپریشنز سینٹر (این سی او سی) نے تمام سرکاری ملازمین کے لیے 30 جون 2021ء تک ویکسی نیشن کرانا لازمی قرار دے دیا۔

بدھ کے روز نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کا اجلاس وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر اور نیشنل کوآرڈی نیٹر لیفٹیننٹ جنرل حمود الزمان خان کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں ویکسی نیشن اور کورونا ایس اوپیز پر عملدرآمد کے حوالے سے تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں ملک بھر میں ویکسی نیشن مہم کو تین طریقوں کی حکمت عملی سے چلانے کا فیصلہ کیا گیا۔

تمام شہریوں کو رضا کارانہ طور پر ویکسین لگوانے کی اپیل کی جائے گی جبکہ پبلک اور پرائیویٹ سیکٹرز کے تمام ملازمین کے لیے ویکسی نیشن لازمی قرار دی گئی ہے۔ اس حوالے سے تمام سرکاری ملازمین کو 30 جون تک ویکسی نیشن لازمی کرانے کی ہدایت کی گئی ہے۔ این سی او سی مختلف سیکٹرز کو ویکسی نیشن کیلئے حوصلہ افزائی کے بدلے مختلف مراعات دینے کی حکمت عملی پر غور کر رہی ہے۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ 11 جون سے اتوار کے علاوہ تمام ویکسی نیشن مراکز صبح 8 سے رات 10 بجے تک کھلے رہیں گے، ویکسی نیشن مراکز اَب اتوار کی بجائے جمعہ کو کھلے رہیں گے۔

11 جون سے 18 سال سے زائد عمر کے افراد کے لیے واک ان ویکسی نیشن شروع کرنے کی اجازت دیدی گئی ہے جبکہ این سی او سی آئی ٹی بیسڈ سولیوشن تیار کرنے کے مرحلے میں ہے جو ویکسی نیشن سرٹیفکیٹ کی تصدیق کرے گا جو جون کے آخر تک تیار کر لیا جائے گا۔

این سی او سی نے 15 جون سے پابندیوں میں مزید نرمی کا فیصلہ کیا ہے، 15 جون سے دو دن کاروباری بندش کو کم کر کے ایک دن کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاہم کس دن کاروبار بند رہے گا اس کا فیصلہ وفاقی اکائیاں خود کریں گی۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اِن ڈور جم کھول دیے جائیں گے تاہم ویکسی نیشن کرانے والے ممبران کو ہی جم میں آنے کی اجازت ہو گی۔ کھیلوں کی سرگرمیوں کی مشروط اجازت دی گئی ہے تاہم کراٹے، باکسنگ، رگبی، کبڈی، ریسلنگ اور واٹر پولو کی اجازت نہیں ہو گی۔

اسی طرح فیسٹیول، کلچرل اور دیگر ایونٹس پر پابندی جاری رہے گی۔ ملک بھر کے مزارات بند رہیں گے۔ 15 جون سے ورک فراہم ہوم کی پالیسی ختم کرتے ہوئے دفاتر میں 100 فیصد ملازمین کی حاضری کی اجازت دیدی گئی ہے۔

ہفتہ میں دو دن بین الصوبائی ٹرانسپورٹ کی پابندی ختم کر دی جائے گی جو 70 فیصد سواریوں کی صلاحیت کے ساتھ سفر کر سکیں گے۔ تفریحی مقامات، تعلیمی شعبے، ماسک پہننے کے ایس او پیز، ریلوے اور اندرون ملک مسافروں کی پالیسی کے بارے میں این سی اوسی پہلے اعلان کر چکی ہے جو نئے فیصلوں تک برقرار رہیں گے۔

ادھر محکمہ صحت خیبرپختونخوا نے تمام سرکاری ملازمین کے لیے کورونا ویکسین لازمی قرار دیتے ہوئے دی اس حوالے سے مرحلہ وار ڈیڈ لائن دے دی ہے۔

سرکاری اعلامیے میں کہا گیا ہےکہ 21 محکموں کو 30 جون اور 11 محکموں کو 15 جولائی کی ڈیڈ لائن دی گئی ہے، مقررہ تاریخ تک ویکسین نا لگوانے والے ملازمین کا دفتر میں داخلہ ممنوع ہو گا۔

اس سے سندھ حکومت بھی سرکاری ملازمین کے لیے ویکسین لازمی قرار دے چکی ہے اور نہ لگوانے والے  ملازمین کی تنخواہوں روکنے کا حکم جاری کر چکی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here