بجلی کے پیداواری شعبہ میں 81 کروڑ 28 لاکھ ڈالر براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری ریکارڈ

جولائی 2020ء سے اپریل 2021ء تک تھرمل پاور منصوبوں میں 15 کروڑ 99 لاکھ ڈالر، پن بجلی منصوبوں میں 17 کروڑ 81 لاکھ ڈالر اور کول پاور پراجیکٹس میں سب سے زیادہ 47 کروڑ 48 لاکھ ڈالر براہ راست بیرونی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی

242

اسلام آباد: پاکستان میں بجلی کے پیداواری شعبہ میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری (ایف ڈی آئی) میں جاری مالی سال کے پہلے 10 ماہ میں گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

سٹیٹ بینک اور سرمایہ کاری بورڈ کی جانب سے اس حوالہ سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق مالی سال کے پہلے 10 ماہ (جولائی تا اپریل) میں بجلی کے شعبہ میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری کا حجم 81 کروڑ 28 لاکھ ڈالر ریکارڈ کیا گیا۔

بجلی کے پیداواری شعبے میں براہ راست بیرونی سرمایہ کاری کی یہ شرح گزشتہ مالی سال 2019-20ء کے ابتدائی دس ماہ (جولائی تا اپریل) کے مقابلہ میں 6.77 فیصد زیادہ ہے، گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں بجلی کے پیداواری شعبہ میں 76 کروڑ 12 لاکھ ڈالرکی سرمایہ کاری ہوئی تھی۔

سٹیٹ بینک اور سرمایہ کاری بورڈ کے مطابق اپریل 2021ء میں بجلی کے پیداواری شعبہ میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری کا حجم ساڑھے سات کروڑ ڈالر ریکارڈ کیا گیا۔

ایندھن (تھرمل) سے بجلی پیدا کرنے کے شعبہ میں جاری مالی سال کے دوران 15 کروڑ 99 لاکھ ڈالر سرمایہ کاری ہوئی جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں اس شعبہ میں 9 کروڑ 21 لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری ریکارڈ کی گئی تھی۔

پانی سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں میں جاری مالی سال کے دوران 17 کروڑ 81 لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری ہوئی جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں اس شعبہ میں براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری کا حجم 12 کروڑ 33 لاکھ ڈالر ریکارڈ کیا گیا تھا۔

کوئلہ سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبوں میں جاری مالی سال کے دوران بیرونی سرمایہ کاری میں گزشتہ سال کی نسبت کمی دیکھی گئی تاہم رواں سال دیگر منصوبوں کی نسبت کول پاور پلانٹس میں بیرونی سرمایہ کاری کا حجم سب سے زیادہ 47 کروڑ 48 لاکھ ڈالر ریکارڈ کیا گیا جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں اس شعبہ میں براہ راست سرمایہ کاری کا حجم 54 کروڑ 57 لاکھ ڈالر رہا تھا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here