9 ماہ میں سروسز سیکٹر کے تجارتی خسارہ میں 52 فیصد سے زائد کمی

جولائی 2020ء تا مارچ 2021ء کے دوران خدمات کے شعبہ کا تجارتی خسارہ ایک ارب 36 کروڑ 25 لاکھ ڈالر تک کم ہو گیا جو گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں دو ارب 86 کروڑ پانچ لاکھ ڈالر ریکارڈ کیا گیا تھا

147

اسلام آباد: گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مالی سال کے پہلے نو ماہ میں خدمات کے شعبہ کے تجارتی خسارہ میں 52 فیصد سے زیادہ کمی ہوئی ہے۔

ادارہ برائے شماریات پاکستان ( پی بی ایس ) کے اعدادوشمار کے مطابق گزشتہ مالی سال 2019-20ء میں جولائی تا مارچ کیلئے سروسز سیکٹر کا تجارتی خسارہ دو ارب 86 کروڑ پانچ لاکھ ڈالر تھا تاہم جولائی تا مارچ 21-2020ء کے دوران خدمات کے شعبہ کا تجارتی خسارہ ایک ارب 36 کروڑ 25 لاکھ ڈالر تک کم ہو گیا۔

اس طرح گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں رواں مالی سال کی پہلی تین سہ ماہیوں کے دوران خدمات کے شعبہ کے تجارتی خسارہ میں ایک ارب 49 کروڑ 80 لاکھ ڈالر یعنی 52.37 فیصد کی نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

پی بی ایس کے مطابق گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں جاری مالی سال میں سروسز سیکٹر کی برآمدات 0.61 فیصد اضافہ سے چار ارب 34 کروڑ 55 لاکھ ڈالر کے مقابلہ میں چار ارب 37 کروڑ 19 لاکھ ڈالر تک بڑھ گئیں۔

دوسری جانب گزشتہ مالی سال کے پہلے نو ماہ کے مقابلہ میں جاری مالی سال کے اسی عرصہ کے دوران خدمات کے شعبہ کی درآمدات میں 20.42 فیصد نمایاں کمی ہوئی ہے اور درآمدات کی مالیت سات ارب 20 کروڑ 61 لاکھ ڈالر کے مقابلہ میں پانچ ارب 73 کروڑ 44 لاکھ ڈالر تک کم ہو گئیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here