آٹو سیکٹر میں تیزی، 9 ماہ میں 14 لاکھ سے زائد موٹرسائیکل، ایک لاکھ سے زائد کاریں فروخت

جولائی 2020ء سے مارچ 2021ء کے دوران موٹرسائیکلوں، رکشوں کی فروخت میں 21.70 فیصد، کاروں میں 31 فیصد، جیپوں میں 157.6 فیصد، کمرشل گاڑیوں میں 41.4 فیصد، ٹریکٹروں کی فروخت میں  57.2 فیصد اضافہ ہوا

248

اسلام آباد: جاری مالی سال 2020-21ء کے ابتدائی 9 ماہ کے دوران گزشتہ مالی مال کی اسی مدت کے مقابلہ میں ملک میں موٹرسائیکلوں اور رکشوں (تھری ویلرز) کی فروخت میں 21.70 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

آل پاکستان آٹوموبائل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے اعدادوشمار کے مطابق جولائی 2020ء سے لے کر مارچ 2021ء  تک کی مدت میں ملک میں 14 لاکھ 38 ہزار 194 یونٹس موٹرسائیکل اور رکشے فروخت ہوئے۔

یہ تعداد گزشتہ مالی سال 2019-20ء کے ابتدائی 9 ماہ کے دوران فروخت ہونے والے ٹو وہیلرز اور تھری وہیلرز کے مقابلہ میں 21.70 فیصد زیادہ ہے، گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں مجموعی طور پر 11 لاکھ 81 ہزار 685 یونٹس موٹر سائیکل اور تھری ویلرز فروخت ہوئے تھے۔

مارچ 2021ء کے دوران موٹر سائیکلوں کی فروخت ایک لاکھ 70 ہزار 350 یونٹس تک پہنچ گئی جبکہ گزشتہ مارچ 2020ء کے دوران موٹرسائیکلز کی فروخت کا حجم ایک لاکھ 413 یونٹس رہا تھا۔ اس طرح مارچ 2020ء کے مقابلہ میں مارچ 2021ء کے دوران موٹر سائیکلز کی ملکی فروخت میں 69 ہزار 937 یونٹس یعنی 70 فیصد کے قریب اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے:

پاکستان میں کاریں بنانے والی تین بڑی کمپنیوں نے 8 سالوں میں کتنا ٹیکس دیا؟

پاک چین کمپنیوں کی مشترکہ تیار کردہ آلسوین کی چھ ماہ کی پروڈکشن 5 دن میں فروخت

مالی سال کے 9 ماہ کے دوران پاکستان میں کاروں کی فروخت میں 31 فیصد اضافہ ریکارڈ

رواں سال ہونڈا موٹر سائیکلوں اور تھری ویلرز کی فروخت میں 24.98 فیصد اضافہ ہوا اور مالی سال کے 9 ماہ میں 9 لاکھ 61 ہزار 76 یونٹس موٹر سائیکل اور تھری وہیلرز فروخت ہوئے۔

سوزوکی موٹر سائیکلوں اور تھری وہیلرز کی فروخت میں 11.03 فیصد اضافہ ہوا اور مالی سال کے 9 ماہ کے دوران 17 ہزار 363 یونٹس سوزوکی موٹرسائیکل اور تھری ویلرز کی فروخت ریکارڈ کی گئی۔

تاہم یاماہا موٹرسائیکلوں کی فروخت میں 8.51 فیصد کی کمی ہوئی، جاری مالی سال کے پہلے 9 ماہ میں 16 ہزار 597 یونٹ یاماہا موٹرسائیکلوں کی فروخت ہوئی جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں 18 ہزار 142  یونٹس یاماہا موٹرسائیکل فروخت ہوئے تھے۔

راوی موٹرسائیکلوں کی فروخت میں جاری مالی سال کے دوران 54.67 فیصد کمی ہوئی۔ گزشتہ مالی سال کے پہلے 9 ماہ میں 11 ہزار 405 یونٹس کے مقابلے میں راوی موٹرسائیکلوں کی فروخت محض پانچ ہزار 169 یونٹس تک رہی، یونائٹڈ آٹو موٹر سائیکلوں کی فروخت میں 18.36 فیصد اضافہ ہوا۔

دوسری جانب رواں مالی سال پاکستان میں کاروں کی فروخت میں 31 فیصد اضافہ ہوا، پاکستان آٹو موبائل ایسوسی ایشن کی طرف سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق جولائی سے لیکر مارچ 2021ء تک کی مدت میں ملک میں مجموعی طور پر ایک لاکھ 12 ہزار244 یونٹس کاروں کی فروخت ریکارڈ کی گئی۔

یہ شرح گزشتہ مالی سال 2019-20ء کے ابتدائی 9 ماہ کے مقابلہ میں 31 فیصد زیادہ ہے، گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں ملک میں کل 85 ہزار 330 یونٹس کاروں کی فروخت ریکارڈ کی گئی تھی۔

مارچ 2021ء کے دوران ملک میں کاروں کی فروخت میں گزشتہ سال مارچ کے مقابلہ میں 195 فیصد کا نمایاں اضافہ ہوا، مارچ 2020ء میں پانچ ہزار 796 یونٹس کاروں کی فروخت ریکارڈ کی گئی جبکہ رواں سال مارچ میں 17 ہزار 105 کاریں فروخت ہوئیں۔

مارچ 2021ء میں ہونڈا سوک اور سٹی کے دو ہزار 603 یونٹس فروخت ہوئے، گزشتہ سال مارچ میں ان دو گاڑیوں کے ایک ہزار 327 یونٹس فروخت ہوئے تھے۔ ٹویوٹا کرولا کی فروخت میں مارچ کے مہینہ میں 1.77 فیصد اضافہ ہوا، مارچ 2021ء میں ٹویوٹا کرولا کے 2126 یونٹس فروخت ہوئے جبکہ گزشتہ سال مارچ میں 2089 یونٹس ٹویوٹا کرولا کی فروخت ریکارڈ کی گئی تھی۔

سوزوکی سوئفٹ کی فروخت میں مارچ 2021ء کے دوران 333 فیصد کا نمایاں اضافہ ہوا، مارچ میں سوزوکی سوئفٹ کی 355 یونٹس کاروں کی فروخت ریکارڈ کی گئی جبکہ گزشتہ سال مارچ میں سوزوکی سوئفٹ کے 82 یونٹس فروخت ہوئے تھے۔

مارچ میں نئی متعارف کردہ ٹویوٹا یاریس کے تین ہزار 317، سوزوکی کلٹس کے ایک ہزار 637  سوزوکی ویگن آر کے ایک ہزار 259 اور سوزوکی آلٹو کے چار ہزار 775 یونٹس فروخت ہوئے۔

اعدادوشمار کے مطابق مالی سال 2021ء کے پہلے 9 ماہ میں جیپوں کی فروخت میں 157.6 فیصد اضافہ ہوا جس کے بعد چھوٹی کمرشل گاڑیاں/ پک اپ کی فروخت میں 41.4 فیصد، ٹریکٹر 57.2 فیصد اور دو یا تین پہیوں والی سواری کی فروخت میں 22 فیصد کا اضافہ ہوا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here