9 ماہ میں متحدہ عرب امارات سے چار ارب 52 کروڑ ڈالر سے زائد ترسیلات زر موصول

دبئی میں کام کرنے والے پاکستانی محنت کشوں کی ترسیلات زر میں 6.7 فیصد، ابوظہبی 2.3 فیصد، شارجہ 291.4 فیصد اور امارات کی دیگرریاستوں سے 343.4 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا: سٹیٹ بینک

297

اسلام آباد: متحدہ عرب امارات میں مقیم پاکستانیوں کی طرف سے ترسیلات زر ملک ارسال کرنے کی شرح میں جاری مالی سال کے پہلے 9 ماہ کے دوران گزشتہ مالی سال کی اسی عرصہ کے مقابلہ میں 7.3 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کی جانب سے اس حوالہ سے جاری کردہ اعدادوشمار کے مطابق جاری مالی سال کے 9 ماہ میں متحدہ عرب امارات میں مقیم پاکستانی محنت کشوں نے چار ارب 52 کروڑ 60 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں یواے ای میں مقیم پاکستانیوں نے چار ارب 21 کروڑ 90 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ بھیجا تھا۔

مارچ 2021ء کے دوران متحدہ عرب امارات میں مقیم پاکستانیوں نے 58 کروڑ 97 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ پاکستان بھیجا جبکہ مارچ 2020ء کے دوران یو اے ای میں مقیم پاکستانیوں نے 51 کروڑ 10 لاکھ ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے: 

کورونا وبا کے باوجود 9 ماہ میں پاکستان کی ترسیلات زر 21.5 ارب ڈالر ریکارڈ

پاکستانیوں کی پیسہ اور اثاثے دبئی میں رکھنے کی لت کو کیسے ختم کیا جائے؟

سٹیٹ بینک کے مطابق دبئی میں کام کرنے والے پاکستانی محنت کشوں کی ترسیلات زر میں جاری مالی سال کے دوران گزشتہ مالی سال کے مقابلہ میں 6.7 فیصد، ابوظہبی 2.3 فیصد، شارجہ 291.4 فیصد اور امارات کی دیگرریاستوں میں کام کرنے والے پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں 343.4 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

دبئی میں مقیم پاکستانیوں نے جاری مالی سال کے پہلے 9 ماہ میں 38 لاکھ 6 ہزار ڈالر کا زرمبادلہ ملک ارسال کیا جبکہ گزشتہ مالی سال کی اسی مدت میں دبئی میں مقیم پاکستانیوں نے 35 لاکھ 68 ہزار ڈالر بھیجے تھے۔ اسی طرح ابوظہبی میں کام کرنے والے پاکستانیوں کی ترسیلات زر کا حجم 1.089 ارب ڈالر ریکارڈ کیا گیا ہے۔

موجودہ حکومت کی جانب سے قانونی اور بینکنگ ذرائع سے ترسیلات زر کی حوصلہ افزائی کے باعث سمندر پار پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ جاری مالی سال کے پہلے 9 ماہ میں سمندر پار پاکستانیوں کی ترسیلات زر میں گزشتہ مالی سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں 26.2 فیصد کا نمایاں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here