پاکستان اور ترکی کے درمیان کارگو ٹرین سروس ایک دہائی بعد بحال

ٹرین 4 مارچ کو استنبول سے تجارتی سامان لے کر اسلام آباد کے لئے نکلے گی، ایک دہائی بعد دوبارہ شروع ہونے والی کارگو ٹرین ہر مہینے کی پہلی جمعرات کو روانہ ہو گی

4656

اسلام آباد: پاکستان سے ایران کے راستے ترکی کیلئے کارگو ٹرین سروس نو سال بعد 4 مارچ سے دوبارہ بحال ہو رہی ہے۔

مقامی میڈیا کی رپورٹ میں وزارت ریلوے کے ایک اعلیٰ عیدیدار کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ 4 مارچ کو استنبول سے 24 کنٹینرز میں تجارتی سامان لے کر کارگو ٹرین اسلام آباد کے لئے روانہ ہو گی جو ایران سے ہوتی ہوئی پاکستان پہنچے گی۔

استنبول سے 4 مارچ کو سفر شروع کرنے والی کارگو ٹرین 12 روز بعد 16 مارچ کو اسلام آباد کے ڈرائی پورٹ پر پہنچے گی۔ یہ ٹرین ایران کے شہر زاہدان سے کوئٹہ اور پھر اسلام آباد آئے گی۔ ٹرین 12 روز میں مجموعی طور پر ساڑھے چھ ہزار کلومیٹر فاصلہ طے کرے گی۔

پاکستان نے ترکی سے آنے والی کارگو ٹرین سے متعلق اکنامک کوآرڈی نیشن آرگنائزیشن (ای سی او) سے رابطہ کر لیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ایرانی حکام کو بھی آگاہ کر دیا گیا ہے۔

استنبول سے اسلام آباد پہنچنے والی ٹرین واپس 19 مارچ کو روانہ ہو گی، پاکستان کے وزیر ریلویز اعظم خان سواتی استنبول سے آنے والی کارگو ٹرین کا اسلام آباد میں استقبال کریں گے۔

واضح رہے ترکی اور پاکستان کے درمیان پہلی ‘ای سی او کارگو ٹرین’ 14 اگست 2009ء میں شروع ہوئی تھی، آخری کارگو ٹرین اسلام آباد سے استنبول کے لئے 5 نومبر 2011ء کو روانہ ہوئی تھی۔

2009ء میں شروع ہونے والی کارگو ٹرین سروس کے تحت ترکی سے پاکستان میں چھ کارگو ٹرینیں آئیں، ترکی سے آخری کارگو ٹرین 9 دسمبر 2011ء کو پہنچی تھی جس کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان کارگو ٹرین سروس معطل ہو گئی تھی۔

ایک دہائی بعد دوبارہ شروع ہونے والی کارگو ٹرین ہر مہینے کی پہلی جمعرات کو روانہ ہو گی، اس ٹرین کی لمبائی 420 میٹر ہو گی۔ ایران، ترکی اور پاکستان کے درمیان ہونے والے نئے معاہدے کے تحت استنبول کے ریلوے اسٹیشن سے روانہ ہونے والی کارگو ٹرین ایران تک 90 گھنٹے اور ایران سے پاکستان تک 135 گھنٹے سفر کرے گی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here