وزیراعظم نے بالواسطہ ٹیکس کم کرنے کیلئے معاشی ٹیم سے تجاویز طلب کر لیں

غریب اور متوسط طبقے کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے کھانے پینے کی درآمدی اشیاء پر عائد ٹیکسوں میں بھی کمی لانے کے لیے تجاویز پیش کی جائیں: اجلاس سے خطاب

186

اسلام آباد: وزیرِاعظم عمران خان نے اپنی معاشی ٹیم کو ہدایت کی ہے کہ بالواسطہ ٹیکسوں کا بوجھ کم کرنے پر خصوصی توجہ دی جائے جبکہ غریب اور متوسط طبقے کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے کھانے پینے کی درآمدی اشیاء پر عائد ٹیکسوں میں بھی کمی لانے کے لیے تجاویز پیش کی جائیں۔

سوموار کو حکومتی معاشی ٹیم کا اجلاس وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت ہوا، اجلاس میں بنیادی اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں کمی لانے اور عام آدمی کو ریلیف فراہم کرنے کے حوالے سے ممکنہ اقدامات پر غور کیا گیا۔

اجلاس میں احساس پروگرام کے تحت مستحق خاندانوں کو متعین کردہ سبسڈی کی فراہمی کے حوالے سے مختلف تجاویز پر بھی غور کیا گیا۔

وزیرِاعظم عمران خان نے کہا کہ موجودہ حکومت کی اولین ترجیح عام آدمی کا مفاد ہے، مشکل معاشی حالات کی وجہ سے غریب عوام سب سے زیادہ متاثر ہو رہے ہیں اس لیے انہیں ہر ممکن ریلیف فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

وزیرِاعظم نے کہا کہ بالواسطہ ٹیکسوں کا بوجھ سب سے زیادہ غریب طبقات پر پڑتا ہے لہٰذا بالواسطہ ٹیکسوں کا بوجھ کم کرنے پر خصوصی توجہ دی جائے۔

اس کے ساتھ ساتھ وزیر اعظم نے معاشی ٹیم کو ہدایت کی کہ درآمد شدہ کھانے پینے کی مختلف اشیاء پر عائد ٹیکسوں میں بھی کمی لانے کے حوالے سے بھی تجاویز پیش کی جائیں تاکہ عوام بالخصوص غریب اور متوسط طبقے کو ریلیف فراہم کیا جا سکے۔

اجلاس میں وفاقی وزراء ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، اسد عمر، مخدوم خسرو بختیار، مشیران عبدالرزاق داد، ڈاکٹر عشرت حسین، گورنر سٹیٹ بنک ڈاکٹر رضا باقر، معاونین خصوصی ڈاکٹر وقار مسعود، ندیم بابر، تابش گوہر اور سینئر افسران نے شرکت کی ۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here