’صوبوں میں ویکسین مساوی اور منصفانہ تقسیم ہو گی‘

وزیراعظم عمران خان نے ملک میں کورونا ویکسی نیشن مہم کا باضابطہ آغاز کر دیا، پہلے مرحلہ میں فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز اور پھر عمر رسیدہ افراد کو ویکسین لگائی جائے گی

334

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے ملک میں کورونا ویکسی نیشن مہم کا باضابطہ آغاز کر دیا ہے، پہلے مرحلہ میں فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز اور پھر عمر رسیدہ افراد کو ویکسین لگائی جائے گی۔

منگل کو کورونا ویکسی نیشن مہم کے آغاز کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ ویکسین کی پانچ لاکھ خوراکیں فراہم کرنے پر چین کے شکر گزار ہیں اور اس سلسلہ میں تیزی سے کام کرنے پر اپنی ٹیم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں، سب سے پہلے فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کو ویکسین فراہم کی جائے گی جو کورونا کے مریضوں کی دیکھ بھال اور علاج کرتے ہیں، اس کے بعد عمر رسیدہ افراد جنہیں زیادہ کورونا سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے ان کو ویکسین دی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیے: 

پاکستان کو چین سے کورونا ویکسین کی پہلی کھیپ موصول

کوویکس پاکستان کو کورونا ویکسین کی ایک کروڑ 70 لاکھ خوراکیں فراہم کریگا

وزیراعظم نے کہا کہ تمام صوبوں میں ویکسین کی مساوی اور منصفانہ تقسیم ہو گی تاکہ کوئی یہ نہ سمجھے کہ ہمارے پاس ویکسین کی جو پانچ لاکھ خوراکیں آئی ہیں وہ کسی ایک صوبے میں زیادہ بانٹ دی گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہیلتھ ورکرز کیلئے ویکسین لگوانا بہت ضروری ہے کیونکہ ساری دنیا میں سب سے زیادہ خطرہ ہیلتھ ورکرز کیلئے ہے، عوام کو چاہئے کہ وہ احتیاطی تدابیر پر عمل کریں اور بالخصوص ماسک کا استعمال کریں۔

عمران خان نے کہا کہ تعلیمی ادارے کھول دیئے گئے ہیں، آہستہ آہستہ ہسپتال بھی کھول دیں گے، ملک میں کورونا کیسز کی تعداد کم ہو رہی ہے، جتنا ایس او پیز پر عمل کیا جائے گا اتنا ہی کورونا وائرس سے لوگوں کو بچایا جا سکے گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ امریکہ میں کورونا سے چار لاکھ سے زائد اموات ہو چکی ہیں، برطانیہ میں ایک لاکھ سے زائد افراد کورونا وائرس کا شکار ہو کر موت کے منہ میں جا چکے ہیں، وہاں مکمل لاک ڈائون ہے اور انہوں نے اپنی معیشت بند کی ہوئی ہے جبکہ ہماری معیشت بحال ہے اور خدمات کے شعبہ میں کچھ حد تک محدود کیا ہوا ہے، اگر احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں گی تو باقی سرگرمیوں کو بھی بحال کر دیا جائے گا۔

اس موقع پر وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر، وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری، وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان اور وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے تخفیف غربت و سماجی تحفظ ڈاکٹر ثانیہ نشتر بھی موجود تھیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here