آڈیٹر جنرل کو ادارے کی خرابیاں دور کرنے کیلئے ایک ماہ میں روڈ میپ بنانے کا حکم

معمولی مسائل میں الجھنے کی بجائے ادارے میں موجود شدید بے ضابطگیوں کی نشاندہی کی جائے، شفافیت یقینی بنانے کیلئے آڈٹ آٹومیشن کا عمل تیز کریں: صدر مملکت عارف علوی

198

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے آڈیٹر جنرل آف پاکستان کو ہدایت کی ہے کہ شفافیت یقینی بنانے کیلئے آڈٹ آٹومیشن کے عمل کو تیزی سے مکمل کریں اور ادارے میں موجود خرابیوں کو دور کرنے کیلئے ایک ماہ میں روڈ میپ تیار کریں۔

گزشتہ روز آڈیٹر جنرل آف پاکستان جاوید جہانگیر نے صدر مملکت عارف علوی سے ملاقات کی، ایوان صدر کے پریس وِنگ سے جاری بیان کے مطابق آڈیٹر جنرل جاوید جہانگیر نے صدر کو اے جی پی آفس کی کارکردگی اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی مدد سے ادارے کی استعداد کار میں بہتری کے اقدامات پر بریفنگ دی۔

صدر مملکت نے کہا کہ آڈیٹر جنرل ادارے کے اندر موجود خرابیوں کو دور کرنے کیلئے ایک ماہ میں روڈ میپ تیار کریں، معمولی مسائل میں الجھنے کی بجائے ادارے میں موجود شدید بے ضابطگیوں کی نشاندہی کی جائے۔

انہوں نے کہا کہ آڈیٹر جنرل ادارے میں موجود کمزوریوں کی نشاندہی کریں اور قابل عمل حل تجویز کریں، آڈٹ آٹومیشن کے عمل کو تیزی سے مکمل کریں تاکہ ادارے میں شفافیت کو یقینی بنایا جا سکے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here