وزیراعظم نے نالج اکانومی کے فروغ کیلئے تجاویز طلب کر لیں

نالج اکانومی سے متعلق خصوصی اجلاس، ڈاکٹر عطاء الرحمٰن کی وزیرِاعظم کو مستقبل کی 12 اہم ترین ٹیکنالوجیز کی پاکستان میں تعلیم و ترویج، نالج اکانومی کے 17 مجوزہ منصوبوں کے بارے میں بریفنگ

249

اسلام آباد: وزیرِ اعظم عمران خان نے تعلیم کیلئے ترقیاتی بجٹ بڑھانے کیلئے تجاویز طلب کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم کی تقدیر بدلنے کیلئے جدید علوم کی تدریس نہایت اہم ہے، اس کے لئے بین الاقوامی معیار کے اداروں کا قیام احسن اقدام ہے۔

گزشتہ روز نالج اکانومی سے متعلق خصوصی اجلاس وزیراعظم کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر، معاونِ خصوصی ڈاکٹر معید یوسف، وائس چیئرمین نالج ٹاسک فورس ڈاکٹر عطاء الرحمن اور متعلقہ اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔

ڈاکٹر عطاء الرحمن نے وزیرِ اعظم کو ہری پور ہزارہ میں پاکستان آسٹرین یونیورسٹی آف اپلائیڈ سائنسز اینڈ انجینئرنگ کی اڑھائی سال کی ریکارڈ مدت میں تکمیل کے حوالے سے آگاہ کیا۔ منصوبے کی منظوری 2018ء میں ہونے کے بعد اس کی تکمیل اور کلاسز کا آغاز ستمبر 2020ء میں ہو چکا ہے۔

ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے بتایا کہ یونیورسٹی آٹھ بین الاقوامی (تین آسٹرین، پانچ چینی) یونیورسٹیوں سے منسلک ہے جہاں مقامی طلباء کو اعلیٰ معیار کی تعلیمی سہولیات اور جدید علوم پڑھائے جا رہے ہیں۔

اس کے علاوہ وزیرِاعظم کو عالمی سطح پر مستقبل میں نہایت اہمیت کی حامل 12 جدید ٹیکنالوجیز کی تعلیم و ترویج کیلئے حکمتِ عملی پر بھی بریف کیا گیا جس میں تعلیم و تدریس کی آٹومیشن، توانائی کو ذخیرہ کرنے، تھری ڈی پرنٹنگ، قابلِ تجدید توانائی، روبوٹکس وغیرہ شامل ہیں۔

وزیرِ اعظم کو افرادی قوت کی استعداد بڑھانے کیلئے درجہ بہ درجہ جدید تعلیم و ہنر فراہم کرنے کی حکمتِ عملی سے بھی آگاہ کیا گیا۔ مزید بتایا گیا کہ پرائمری سے لے کر پوسٹ گریجویٹ سطح تک نظام میں تبدیلیاں لائی جائیں گی اور ہنرمند افراد کی تعداد میں خاطر خواہ اضافہ کیا جائے گا۔

ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے اجلاس کو سیالکوٹ میں حال ہی میں منظور ہونے والی بین الاقوامی انجینئرنگ یونیورسٹی پر ترجیحی بنیادوں پر کی جانے والی پیش رفت سے آگاہ کیا۔ وزیرِاعظم نے مذکورہ منصوبے کو ناصرف سراہا بلکہ اس کیلئے ہر قسم کے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔

ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے اس موقع پر اجلاس کو نالج اکانومی کے 17 مجوزہ منصوبوں کے بارے آگاہ کرنے کے ساتھ ساتھ 17 جاری منصوبوں پر پیش رفت سے آگاہ کیا۔

وزیرِ اعظم نے ان اقدامات کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے اس بات کا اعادہ کیا کہ قوم کی تقدیر بدلنے کیلئے جدید علوم کی تدریس نہایت اہم ہے. اس کیلئے بین الاقوامی معیار کے اداروں کا قیام احسن اقدام ہے۔ مزید وزیرِ اعظم نے تعلیم کیلئے ترقیاتی بجٹ بڑھانے کیلئے تجاویز طلب کر لیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here