راوی اربن پروجیکٹ: ‘دو لاکھ نوکریاں پیدا ہوںگی، 49 صنعتوں کو فروغ ملے گا’

277

لاہور: چیئرمین راوی اربن ڈویلپمنٹ اتھارٹی راشد عزیز نے کہا ہے کہ  راوی ریور فرنٹ اربن پروجیکٹ سے دو لاکھ نوکریاں پیدا ہوں گی اور 49 صنعتوں کو فروغ ملے گا۔

انہوں نے کہا کہ لاہور کے نواح میں بین الاقوامی سطح کی سہولیات اور معیارات کا حامل نیا شہر آباد ہونے کے حوالے سے پیش رفت جاری ہے، ناصرف پلاننگ کے عمل میں تیزی لائی گئی ہے بلکہ منصوبہ اب گراﺅنڈ لیول پر پہنچ چکا ہے۔

راشد عزیز نے بتایا کہ یہ ملکی تاریخ کا سب سے بڑا منصوبہ ہے جو ناصرف لاہور یا پنجاب بلکہ پورے پاکستان میں نئے رجحانات متعارف کرائے گا، راوی کنارے آباد ہونے والے اس نئے شہر کو دنیا کے ترقی یافتہ شہروں کی طرح ٹیکنالوجی سمیت دیگر سہولیات سے مزین کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ یہ منصوبہ پورے خطے کیلئے ایک مثال ثابت ہو گا، یہ شہر حجم کے اعتبار سے قومی دارالحکومت سے بھی بڑا ہو گا، اس شہر میں مسائل کو وسائل میں تبدیل کیا جائے گا، یہاں ہائی ٹیک ویسٹ مینجمنٹ پلانٹ لگایا جائے گا جو ویسٹ سے بجلی پیدا کرے گا اور شہر کی توانائی کی ضروریات پوری کرنے میں مدد دے گا۔

یہ بھی پڑھیے: 

لاہور کے راوی اربن ڈویلپمنٹ پروجیکٹ میں آٹھ ارب ڈالر کی بیرونی سرمایہ کاری متوقع

راوی اربن منصوبے کی حدود میں آنے والی صنعتوں اور رہائشی آبادیوں کا مستقبل کیا ہوگا؟

چیئرمین راوی اربن ڈویلپمنٹ اتھارٹی نے کہا منصوبے کے آغاز سے ہی دو لاکھ نوکریوں کے مواقع پیدا ہوں گے، اور 49 صنعتی شعبوں کے فروغ میں معاونت ملے گی، جہاں کورونا نے عالمی معیشت کو متاثر کیا وہاں راوی اربن پروجیکٹ جیسے ترقیاتی منصوبے ملکی معیشت کو مضبوط کرنے میں اہم سنگ میل ثابت ہوتے ہیں۔

انہوں نے بتا یا کہ اس منصوبے میں مقامی اور بین الاقوامی سرمایہ کاروں نے شروع سے ہی دلچسپی کا اظہار کیا ہے اور اس وقت پاکستانی، چینی اور دیگر ممالک کے سرمایہ کاروں سے پیشکش آ چکی ہے جو اس منصوبے کی کامیابی کی ضمانت ہے، منصوبے کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے سرمایہ کاری کی کمی درپیش نہیں ہے۔

چیئرمین راوی اربن ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا مزید کہنا تھا کہ اس منصوبے میں اربن فاریسٹ، ریور ورکس اور جھیلیں بھی شامل ہیں جو ناصرف اس منصوبے کی خوبصورتی کو چار چاند لگائیں گی بلکہ اربن فاریسٹ کی وجہ سے یہ ایک ماحول دوست منصوبہ ثابت ہو گا جو وزیر اعظم کے کلین اینڈ گرین پاکستان کے ویژن کا عکاس ہو گا۔

انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان خود بھی اس منصوبہ میں خصوصی دلچسپی رکھتے ہیں اور اس کی فوری تکمیل کیلئے قومی و صوبائی قیادت کی طرف سے بھرپور تعاون کی یقین دہانی کرائی گئی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here