ماحول دوست توانائی سے متعلق وزیراعظم عمران خان کا اعلان، عالمی بینک کا خیر مقدم

پیرس معاہدے کے حوالے سے عالمی ورچوئل سمٹ سے خطاب میں وزیراعظم نے 2030ء تک 60 فیصد ماحول دوست توانائی کی پیداوار، 30 فیصد گاڑیاں بجلی پر منتقل کرنے کا اعلان کیا تھا

335

اسلام آباد: عالمی بینک نے وزیراعظم عمران خان کی جانب سے 2030ء تک پاکستان میں 60 فیصد صاف اور ماحول دوست توانائی کی پیداوار کے اعلان کا خیرمقدم کیا ہے۔

پاکستان میں عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹر ناجی بن حسائن نے  ایک بیان میں کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے 2030ء تک پاکستان میں 60 فیصد ماحول دوست اور متبادل ذرائع سے توانائی کی پیداوار کا اعلان انتہائی خوش آئند ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کی جانب سے کوئلہ سے بجلی پیدا کرنے کے نئے منصوبوں پر پابندی کا اعلان بھی انتہائی قابل تحسین ہے جس کا عالمی بینک بھرپور خیرمقدم کرتا ہے۔

عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹر نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان کا اعلان اورعزم ماحولیاتی تبدیلی اور پائیدار ترقی کے ایجنڈے کیلئے بہت اہمیت کا حامل ہے۔

واضح رہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں پر پیرس معاہدے کی پانچویں سالگرہ پر بین الاقوامی ورچوئل سمٹ سے اپنے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہ پاکستان صاف اور ماحول دوست توانائی کی جانب گامزن ہے اور 2030ء تک مجموعی توانائی کے 60 فیصد ذرائع کو کلین انرجی اور 30 فیصد گاڑیوں کو بجلی پر منتقل کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے اپنے خطاب میں کہا تھا کہ پاکستان کا ماحولیاتی آلودگی میں حصہ ایک فیصد سے بھی کم ہے تاہم یہ امر افسوس ناک ہے کہ پاکستان ماحولیاتی آلودگی سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والا پانچواں ملک ہے۔

عمران خان نے کہا کہ “سب سے پہلے ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں کے اثرات سے نمٹنے کے لئے قدرتی ذرائع بروئے کار لائیں، اس سلسلے میں ہم آئندہ تین سال میں 10 ارب درخت لگا رہے ہیں، ہم نے نیشنل پارک اور محفوظ علاقوں کی تعداد 30 سے بڑھا کر 45 کر دی ہے۔”

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here