’ویکسین کے باوجود کووڈ-19 کی معاشی تباہ کاریاں جاری رہنے کا خدشہ‘

عالمی معیشت میں 4.3 فیصد گراوٹ متوقع، غریب اور پسماندہ ممالک کی معیشتیں زیادہ متاثر ہوں گی، مزید 130 ملین افراد انتہائی غربت کا شکار ہو سکتے ہیں، رپورٹ

101

اسلام آباد: کوویڈ۔19 ویکسین کی دستیابی کے باوجود عالمی وباء کے معاشی نقصانات جلد ختم نہیں ہوں گے۔

اقوام متحدہ کے ادارہ برائے تجارت و ترقی (یو این سی ٹی اے ڈی) کی رپورٹ میں عالمی برادری کو خبر دار کیا گیا ہے کہ کوویڈ۔19 کی ویکسین کی دستیابی وبا کے معاشی نقصانات کو کم نہیں کر سکے گی، وبا کی وجہ سے ہونے والے معاشی نقصانات طویل عرصہ تک جاری رہنے کا خدشہ ہے اور بالخصوص غریب اور پسماندہ ممالک کی معیشتیں زیادہ متاثر ہو سکتی ہیں۔

یہ بھی پڑھیے: 

برطانوی کمپنی کا کورونا کی 90 فیصد تک موثر ویکسین بنانے کا دعویٰ

روسی کورونا ویکسین سپوتنک 95 فیصد موثر، فی خوراک قیمت کتنی ہو گی؟

یواین سی ٹی اے ڈی کی ’امپیکٹ آف کوویڈ۔ 19پینڈیمک آن ٹریڈ اینڈ ڈویلپمنٹ‘  رپورٹ کے مطابق سال 2020ء کے دوران کووڈ۔19 کی وبا سے بین الاقوامی معیشت میں 4.3 فیصد گراوٹ متوقع ہے۔

عالمی ادارے نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس کی وبا کے باعث دنیا بھر میں مزید 130 ملین افراد انتہائی غربت کا شکار ہو سکتے ہیں، اگر فی الفور پالیسی ایکشن نہ لیا گیا تو اقوام متحدہ کا پائیدار ترقی کا ایجنڈا 2030ء بری طرح متاثر ہو سکتا ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تجارتی بحالی اور وباء کے نقصانات کو کم کرنے کےلئے تجارتی پالیسیوں پر نظرثانی کے ساتھ ساتھ ماحولیات کے شعبہ پر بھی خصوصی توجہ کی ضرورت ہے۔

اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے نے بین الاقوامی ادارے کو خبر دار کیا ہے کہ کوویڈ۔19 کے معاشی نقصانات کو کم کرنے کے لئے عالمی سطح پر مربوط اقدامات کئے جائیں تاکہ کروڑوں انسانوں کو غربت سے بچانے کے ساتھ ساتھ معاشی بحالی کو بھی یقینی بنایا جا سکے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here