کیا چاند پر پانی موجود ہے؟ ناسا کی نئی تحقیق

293

کیلی فورنیا: امریکی خلائی ادارے ناسا نے تصدیق کی ہے کہ چاند کے روشن حصوں میں بھی پانی موجود ہے۔

امریکی ذرائع ابلاغ کے مطابق  کیلی فورنیا میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے ناسا کے ترجمان نے بتایا کہ چاند کے وہ حصے جو سورج کی جانب ہیں وہاں پانی کی دریافت ہوئی ہے جس سے یہ خیال کیا جا رہا ہے کہ چاند پر پانی کی موجودگی پہلے خیال کی گئی مقدار سے کہیں زیادہ ہے۔

یہ بھی پڑھیے: 

موبائل کمپنی نوکیا چاند پر انٹرنیٹ سروس مہیا کرے گی

روس کا 2040ء تک چاند پر انسانی بستی کی تعمیر کا منصوبہ

انہوں نے کہا کہ یہ دریافت ایئر کرافٹ 747 پر قائم صوفیہ نامی ٹیلی سکوپ کے ذریعے کی گئی، یہ طیارہ کافی بلندی پر پرواز کرتا ہے اور اسے خلائی تحقیق کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔

واضح رہے کہ 1969 میں جب انسان چاند پر پہلی بار اترا تھا تو یہ خیال کیا جاتا تھا کہ چاند پر پانی نہیں ہے مگر اس کے بعد مشاہدوں سے یہ بات معلوم ہوئی کہ یہاں برف اور پانی کے آثار موجود ہیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here