سرمایہ کاری کیلئے بڑا اقدام، پنجاب حکومت نے سیمنٹ فیکٹریز لگانے کیلئے این او سی کا اجراء آسان بنا دیا

غیر استعمال شدہ مائننگ لیز کے حوالے سے قواعدو ضوابط میں ردوبدل کا فیصلہ، مختلف محکموں میں فیکٹریاں لگانے کیلئے این او سی کے اجراءکو ٹائم لائن کے ساتھ منسلک کر دیا گیا،عثمان بزدار

126

لاہور:  پنجاب حکومت نے صوبے میں اربوں روپے کی سرمایہ کاری کیلئے بڑا اقدام اٹھاتے ہوئے سیمنٹ فیکٹریز لگانے کیلئے مختلف محکموں کے این او سی کے اجراء کو آسان اور ٹائم لائن کے ساتھ منسلک کر دیا ہے۔

اس کے ساتھ غیراستعمال شدہ مائننگ لیز کے حوالے سے قواعدو ضوابط میں ضروری ردوبدل کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے۔

اس حوالے سے وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا ہے کہ سرمایہ کاروں کیلئے ہر طرح کی آسانیاں پیدا کریں گے۔ این او سی جاری کرنے کے حوالے سے پراسیس کو مزید تیز کیا جائے اور سرمایہ کاروں کی آسانی کیلئے قواعد و ضوابط کو سہل بنایا جائے، کسی بھی محکمے میں این او سی کے اجراء میں تاخیر برداشت نہیں کروں گا۔

انہوں نے این او سی کے اجراء کے حوالے سے ہونے والی پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کیا اور محکمہ صنعت اور دیگر متعلقہ محکموں کی کارکردگی کو سراہا جبکہ سیکرٹری لوکل گورنمنٹ کی سربراہی میں سٹیرنگ کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔

مذکورہ کمیٹی این او سی کے اجراء کے حوالے سے تمام پراسیس کا جائزہ لے گی اور فیکٹریز لگانے کیلئے سرمایہ کاروں کی درخواستوں پر این او سی کے بروقت اجراء کو یقینی بنائے گی۔

وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے کہا کہ صنعت لگے گی تو سرمایہ کاری آئے گی، نئی سرمایہ کاری سے روزگار کے بے پناہ مواقع پیدا ہوں گے، معیشت مضبوط ہو گی اور کاروبار پھلے پھولے گا۔

وزیراعلیٰ کو سیکرٹری صنعت نے بریفنگ میں بتایا کہ پنجاب حکومت کو نئے سیمنٹ پلانٹ لگانے کیلئے 23 درخواستیں موصول ہوئی ہیں، پانچ سیمنٹ پلانٹ لگانے کی درخواستوں پر این او سی اگلے ماہ کے شروع میں جاری کر دیئے جائیں گے جبکہ دیگر درخواستوں پر بھی فوری طور پر ضروری کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔ ایک سیمنٹ پلانٹ پر تقریباً 30 سے 40 ارب روپے لاگت آتی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here