مالی سال 2020ء: پاکستان پٹرولیم کی آمدن میں 18.5 فیصد کمی

175

اسلام آباد: گزشتہ مالی سال 2020ء کے دوران پاکستان پٹرولیم لمیٹڈ (پی پی ایل) کی بعد از ٹیکس آمدنی میں 18.5 فیصد کمی ہوئی ہے۔

پاکستان سٹاک ایکسچینج (پی ایس ایکس) کو بھیجے گئے کمپنی کے مالیاتی اعداد وشمار کے مطابق گزشتہ مالی سال میں جولائی تا جون 2019-20 کے دوران پی پی ایل کی خالص آمدن 50 ارب 25 کروڑ 60 لاکھ روپے تک کم ہو گئی جبکہ کے اس کے مقابلہ میں جولائی تا جون 2018-19 کے لئے کمپنی کو 61 ارب 63 کروڑ 20 لاکھ روپے کی بعد از ٹیکس آمدن حاصل ہوئی تھی۔

اس طرح مالی سال 2019ء کے مقابلہ میں مالی سال 2020ء میں پاکستان پٹرولیم لمیٹڈ کی بعد از ٹیکس آمدن میں 11 ارب 37 کروڑ 60 لاکھ روپے یعنی 18 فیصد سے زیادہ کی کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق بعد از ٹیکس منافع میں کمی کے نتیجہ میں پی پی ایل کی فی حصص آمدنی بھی 22.65 روپے کے مقابلہ میں 18.47 روپے فی حصص تک کم ہو گئی ہے۔

مزید برآں گزشتہ مالی سال پی پی ایل کو صارفین کے ساتھ معاہدوں کی صورت میں ہونے والی آمدن بھی 3.8 فیصد کمی سے ایک کھرب 63 ارب 89 کروڑ روپے کے مقابلہ میں ایک کھرب 57 ارب 59 کروڑ 30 لاکھ روپے تک کم ہوئی ہے۔

کمپنی کے آپریٹنگ اخراجات 6.9 فیصد اضافہ سے 40 ارب 70 لاکھ روپے کے مقابلہ میں 42 ارب 76 کروڑ روپے تک بڑھ گئے جس کے نتیجہ میں کمپنی کی عمومی آمدن مالی سال 2019ء کے مقابلہ میں 2020ء کے دوران 8.6 فیصد کم ہوئی ہے جس کے نتیجہ میں پی پی ایل کے بعد از ٹیکس منافع میں کمی ہوئی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here