سائنس دانوں نے رات کے وقت بجلی بنانے والے ’اینٹی سولر‘ پینل بنا لیے

193

نیویارک: ایک نئی تحقیق کے بعد سائنس دانوں نے ایسے ”اینٹی سولر“ پینل بنا لیے ہیں جو رات کے وقت زمین کی گرمی سے بجلی بنائیں گے اور ماحول دوست توانائی کا ذریعہ بنیں گے۔

امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق سولر پینل سورج کی روشنی سے سے بجلی بناتے ہیں جب کہ اینٹی سولر پینل رات کے وقت زمین سے نکلنے والی ریڈی ایشن سے ٹھنڈے ہوتے ہیں اور اس سے بجلی بناتے ہیں۔

یہ نئی تحقیق آپٹک ایکسپریس نامی سائنسی جریدے میں شائع ہوئی ہے۔ سٹینفرڈ یونیورسٹی اور ٹیکنو اسرائیل انسٹی ٹیوٹ کے محققین کا کہنا ہے کہ انہوں نے یہ نتائج تھرمو الیکٹرک جنریٹر میں بہتری پیدا کر کے حاصل کیے ہیں۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ اب یہ پینل فی مربع میٹر 2.2 واٹ توانائی پیدا کرتے ہیں۔ یہ پرانے پینلز کے مقابلے میں 120 فی صد اضافی بجلی ہے۔

سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ ابھی تجربات جاری ہیں جب کہ اس ٹیکنالوجی حصول میں مارکیٹ میں موجود پرزے اور متعلقہ ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے۔

سائنس دان اس نئی تحقیق کو ماحول دوست توانائی کی ضروریات پوری کرنے میں معاون قرار دے رہے ہیں۔ یہ ٹیکنالوجی ایسے ممالک میں بھی بہت کار آمد ہو سکتی ہے جہاں دن کے اکثر حصے میں سورج کی روشنی نہیں رہتی یا قطب شمالی کے قریب واقع ممالک جہاں آدھا سال رات رہتی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here