20 ملین ڈالر سے کورونا ایمرجنسی رسپانس منصوبے کی منظوری

294

اسلام آباد: وزارت منصوبہ بندی، ترقی، اصلاحات و خصوصی اقدامات نے 20 ملین ڈالر کی لاگت سے کورونا وائرس، صحت ایمرجنسی رسپانس منصوبے کی منظوری دیدی جس میں اے ایف ڈی (ایجنسی فرانکائز ڈی ڈویلپمنٹ) نے معاونت فراہم کی۔

پلاننگ کمیشن کے اجلاس میں ڈپٹی چیئرمین پلاننگ کمیشن جہانزیب خان نے کہا کہ مجوزہ پروجیکٹ کووڈ۔19 ردعمل اور تیاری کےلئے جاری حکومتی اقدامات کے اثرات کی تکمیل میں اور اضافہ کرے گا۔

انہوں نے حکومت کی حمایت کرنے کےلئے ایجنسی فرانکائز ڈی ڈویلپمنٹ (اے ایف ڈی) کا اعتراف کیا اور کہا کہ کووڈ۔19 وبائی امراض کے خلاف موثر ردعمل اور بازیابی کی حکمت عملی طے کرنے میں یہ انتہائی قابل قدر ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اے ایف ڈی اور حکومت پاکستان کی ہمارے ملک کے لوگوں کی ترقی کےلئے دیرینہ شراکت دار ہے چونکہ حکومت پاکستان کوویڈ۔19 کے ذریعے ہونے والے انسانی اور مالی نقصان کو کم کرنے کےلئے ہر ممکن وسائل کا استعمال کرتی ہے لہٰذا اے ایف ڈی جیسے بین الاقوامی شراکت داروں کی جانب سے اہم حمایت کا اعتراف اور تعریف کی جاتی ہے۔

ڈی جی ہیلتھ نے فورم کو آگاہ کیا کہ صحت منصوبے کےلئے اے ایف ڈی مالی معاونت موجودہ صحت کی سہولیات میں درجہ بندی یا جہاں ضرورت ہو وہاں نئی سہولیات کے قیام اور صحت کی افرادی قوت کی صلاحیت کو مستحکم کرنے کےلئے استعمال کی جائے گی۔

فنڈز ہیلتھ مینجمنٹ سسٹم کو مضبوط بنانے کےلئے استعمال ہوں گے، یعنی انونٹری کنٹرول، بیماریوں کی نگرانی، معیاری پروٹوکول وغیرہ کے ساتھ ساتھ قومی ضروریات کو پورا کرنے کےلئے آلات کی فراہمی کےلئے بھی استعمال ہوں گے۔

ممبر سوشل سیکٹر ڈاکٹر شبنم سرفراز نے بتایا کہ اس منصوبے کی منظوری کے بعد اس وبا کی شروعات کے بعد سے پلاننگ کمیشن کی جانب سے ایم این ایچ ایس آر سی کو دیئے گئے فنڈز کی کل رقم اب 613 ملین امریکی ڈالر ہو گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان نے اس وباء سے نمٹنے کےلئے خاطر خواہ مالی اعانت فراہم کی ہے۔ انہوں نے صوبوں کی ضروریات کو پورا کرنے کےلئے خریداری میں تیزی لانے اور بجٹ کو موثر انداز میں بروئے کار لانے کو یقینی بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔

اجلاس میں وزارت منصوبہ بندی کمیشن، وزارت نیشنل ہیلتھ سروسز اینڈ ریگولیشن، وزارت موسمیاتی تبدیلی، ای اے ڈی، این ڈی ایم اے اور اے ایف ڈی کے عہدیدار بھی موجود تھے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here