کورونا وائرس کے تناظر میں انسانی سرمایہ کے تحفظ کیلئے پالیسی اصلاحات متعارف کرانے میں معاونت کریں گے: عالمی بینک 

174

اسلام آباد: عالمی بینک کورونا وائرس کے عالمگیر وباء کے اثرات کے تناظر میں پاکستان کو صحت عامہ، تعلیم، خواتین کیلئے اقتصادی مواقع کی فراہمی اور سماجی تحفظ کے نظام کو مضبوط بنانے میں معاونت فراہم کر رہا ہے ۔ عالمی بینک سیکورنگ ہیومن انویسٹمنٹ ٹو فوسٹرٹرانسفرمیشن (شفٹ) پروگرام کے تحت کورونا وائرس کی وباء کے تناظر میں انسانی سرمایہ کے تحفظ کیلئے پالیسی اصلاحات متعارف کرانے میں معاونت فراہم کرے گا۔

پروگرام کے تحت پولیو اور دیگر بیماریوں کی روک تھام میں وفاق اور صوبوں کے درمیان رابطہ کاری کو فروغ دیا جائے گا۔ شفٹ پروگرام کے زریعہ ایک کروڑ 20 لاکھ افراد کو امداد کی فراہمی کے ضمن میں حکومت پاکستان کے سماجی تحفظ کے پروگراموں میں بھی معاونت فراہم کی جائیگی۔

پاکستان میں عالمی بینک کے کنٹری ڈائریکٹر الانگو پیچوموتو نے بتایا کہ کورونا وائرس کی وباء سے پاکستان میں معمول کی زندگی متاثرہوئی ہے، اس سے نہ صرف اقتصادی سرگرمیوں بلکہ انسانی سرمایہ کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پروگرام سے صحت عامہ اورسماجی تحفظ کے حوالہ سے خدمات کی عالمگیریت کی اہمیت اجاگر ہوتی ہے۔

پروگرام کی ٹاسک ٹیم کی لیڈر کرسٹیناپناسکو سانتوز نے بتایا کہ پاکستان کی کورونا وائرس کی وبا کے اثرات کو کم کرنے کی اہلیت و اہمیت کا انحصاراس بات پرہے کہ وہ (پاکستان) کتنے کم عرصہ میں موثرطریقے سے سماجی تحفظ کے پروگرام کو معاشرے کے پسماندہ اورغریب طبقات تک پہنچانے میں کامیابی حاصل کرتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ عالمی بینک کے اس پروگرام سے احساس پروگرام اورصوبائی حکومتوں کے سماجی تحفظ کے پروگراموں کو مربوط بنانے اوراس کے ثمرات معاشرے کے ٖغریب اور کمزور طبقات تک پہنچانے میں مدد ملے گی۔ اس پروگرام کیلئے انٹرنیشل ڈیولپمنٹ ایسوسی ایشن مالی معاونت فراہم کرے گی، پروگرام کی میچوریٹی کی مدت 30 سال ہے جس میں 5 سال کی رعایتی مدت بھی شامل ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here