چینی بحران رپورٹ میں ملز مالکان کی جانب سے بڑے پیمانے پر بے ضابطگیوں کا انکشاف

مفادات کے ٹکراؤ کا قانون نافذ، حکومت میں شامل تمام مشیران اور معاونین خصوصی کو اپنے اثاثے فوری کابینہ ڈویژن میں ڈیکلیئر کرنے کا حکم

67

 اسلام آباد: وفاقی کابینہ نے شوگر انکرائری کمیشن کی فارنزک رپورٹ عام کر دی ہے جس میں ملز مالکان کی جانب سے بڑے پیمانے پر فراڈ اور بے ضابطگیوں کا انکشاف ہوا ہے۔

شوگر انکوائری کمیشن کے سربراہ واجد ضیاء نے معاون خصوصی احتساب شہزاد اکبر کے ہمراہ وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کی جس میں انہوں نے شوگر انکوائری کمیشن کی رپورٹ پیش کی۔

ذرائع کے مطابق 346 صفحات کی شوگر کمیشن کی حتمی رپورٹ میں شوگر ملز مالکان پر ٹیکس چوری کا الزام عائد کیا گیا ہے اور 200 سے زائد صفحات کی رپورٹ کے ساتھ شوگر ملز مالکان کے بیانات بھی لگائے گئے ہیں۔

وزیراعظم کے معاون خصوصی شہباز گل نے ٹویٹ میں کہا کہ کابینہ اجلاس میں طے ہو گیا ہے کہ جب تک عمران خان وزیراعظم ہیں کوئی عوام کو لوٹ نہیں سکتا، وہ وقت گیا جب وزیراعظم اور کابینہ مل کر غریب دشمن اقدامات کرتے تھے، سخت ترین دباؤ کے باوجود کپتان آج غریب کے لیے ڈٹ کر کھڑا ہوا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here