کویت کی پاکستان کیساتھ معاشی، دفاعی اور عسکری شعبوں میں تعاون کے فروغ کیلئے سٹرٹیجک پلان مرتب کرنے کی تجویز

238

اسلام آباد: کویت نے پاکستان کے ساتھ معاشی، دفاعی اور عسکری شعبوں میں تعاون کے فروغ کیلئے پانچ سے 20 سال کی مدت پر محیط سٹرٹیجک پلان مرتب کرنے کی تجویز  پیش کر دی۔ یہ تجویز کویت کے وزیر خارجہ نے اپنے پاکستانی ہم منصب شاہ محمود قریشی  سے ٹیلی فونک رابطہ کے دوران پیش کی۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے جمعرات کو اپنے کویتی ہم منصب ڈاکٹر احمد نصیر ال محمد الصباح سے وڈیو لنک کے ذریعے رابطہ کیا۔ دونوں وزراء خارجہ نے کورونا عالمی وبائی صورتحال اور اس سے نبرد آزما ہونے کیلئے کی جانے والی کاوشوں سمیت باہمی دلچسپی کے متعدد امور پر تبادلہ خیال کیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اس وائرس کی روک تھام کیلئے کویتی حکومت کی جانب سے کئے گئے بروقت اقدامات کو سراہتے ہوئے پاکستان میں اس وبائی صورتحال سے نمٹنے کیلئے جاری کاوشوں سے اپنے کویتی ہم منصب کو آگاہ کیا اور کہا کہ کورونا عالمی وبائی چیلنج اس صدی میں بنی نوع انسان کو پیش آنے والے بڑے چیلنجز میں سے ایک ہے۔

شاہ محمود قریشی نے کورونا وبائی تناظر میں ترقی پذیر ممالک کی معیشتوں کو سہارا دینے کیلئے وزیراعظم عمران خان کے ”گلوبل ڈیٹ ریلیف“ مطالبہ کی تفصیلات سے کویتی وزیر خارجہ کو آگاہ کیا۔

کویتی وزیر خارجہ نے کورونا وباء کے پیش نظر ترقی پذیر ممالک کی معاشی بحالی کیلئے وزیراعظم عمران خان کے گلوبل ڈیٹ ریلیف تجویز کو سراہتے ہوئے سلطنت کویت کی طرف سے اس مطالبہ کی حمایت کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ کویت پاکستان کے شعبہ صحت کی بہتری کیلئے بھی ممکنہ مالی معاونت فراہم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔

کویتی وزیر خارجہ نے کہا کہ ہمیں فوڈ سیکورٹی اور صحت کے شعبہ جات میں پاکستان کی معاونت درکار ہے۔ انہوں نے دونوں ممالک کے مابین معاشی، دفاعی اور عسکری شعبوں میں تعاون کے فروغ کیلئے 5 سے 20 سال کی مدت پر محیط سٹرٹیجک پلان مرتب کرنے کی تجویز بھی پیش کی۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ مسلسل لاک ڈاؤن اور بلاجواز پابندیوں کے سبب مقبوضہ جموں و کشمیر میں کورونا وباء کے پھیلاؤ کا خدشہ مزید بڑھ چکا ہے۔ بھارت سرکار اپنی ہندوتوا سوچ کے تحت بھارتی مسلمانوں کو کورونا وائرس کے پھیلاؤ کا ذمہ دار قرار دے کر مذہبی منافرت کو ہوا دے رہی ہے، عالمی برادری کو فوری طور پر اس بھارتی رویہ کا نوٹس لینا چاہئے۔

کویتی وزیر خارجہ نے واضح کیا کہ ہندوستان میں جاری اسلامو فوبیا اور مسلمانوں کے ساتھ ناروا سلوک کی روک تھام کیلئے کویتی کونسل آف منسٹرز  نے او آئی سی سے  مؤثر کردار ادا کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

وزیر خارجہ نے کویت کے وزیر خارجہ کو حالات معمول پر آنے کے بعد دورہ پاکستان کی دعوت دی جسے انہوں نے شکریہ کے ساتھ قبول کیا۔ دونوں وزراء خارجہ کے مابین اس وبائی چیلنج سے نمٹنے اور اہم دوطرفہ امور پر پیشرفت کا جائزہ لینے کیلئے ہر ماہ دو مرتبہ مشاورتی رابطہ پر اتفاق کیا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here