کورونا کے معاشی اثرات، 102 ممالک نے مالی معاونت کیلئے رابطہ کیا ہے: آئی ایم ایف

306

اسلام آباد: بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء سے نمٹنے کیلئے رکن ممالک کے ساتھ تعاون کاسلسلہ جاری ہے اور اب تک 102 ممالک نے مالی معاونت کیلئے رابطہ کیا ہے۔

آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹرکرسٹلیناجوارگیوانے اتوار کوایک انٹرویو میں کہاہے کہ کوروناوائرس کی عالمگیروباء کے اثرات سے نمٹنے کیلئے اب تک متعدد ممالک کیلئے ہنگامی بنیادوں پرامداد اورمعاونت فراہم کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وباء کے اثرات سے نمٹنے کیلئے ہنگامی امدادتک رسائی کو دوگنا کردیا گیاہے۔ آئی ایم ایف کے انتظامی بورڈنے رکن ممالک کیلئے مختصرمدت کے قرضوں کے نئے نظام شارٹ ٹرم لیکویڈیٹی لائن (ایس ایل ایل) اور ریپڈ فنانسنگ انسٹرومنٹ  کے ذریعہ پاکستان سمیت درجنوں ممالک کیلئے امداد اورمعاونت فراہم کی ہے۔

یہ بھی پڑھیے:

تحریک انصاف کا دور، قرضے 9.2 کھرب اضافے سے 33.4 کھرب ہوگئے

مزدوروں کو بے روزگار نہ کرنے والے صنعتی اداروں کو سٹیٹ بینک سستے قرضے دے گا:وزیر اعظم عمران خان

خیبرپختونخوا کے فیکٹری مالکان کا آسان شرائط پر بلا سود قرضے، تین ماہ بجلی و گیس بل معاف کرنے کا مطالبہ

انہوں نے بتایاکہ اب تک 102 ممالک نے مالی معاونت کیلئے آئی ایم ایف  کے ساتھ رابطہ کیاہے ۔ آئی ایم ایف سے  حاصل کردہ قرضہ کورکن ممالک وباء کے دنوں میں ادائیگیوں میں توازن کوبرقرار اورمستحکم رکھنے اورہنگامی طبی سپلائی  کیلئے استعمال کرسکیں گے۔ رکن ممالک کو 145 فیصد تک کوٹہ کی سہولت حاصل ہوگی۔

آئی ایم ایف کی منیجنگ ڈائریکٹر نے امید ظاہر کی کہ 2021ء میں اقتصادی بحالی کاعمل شروع ہوگا۔ اگرحکومتیں صحت اور صحت عامہ کے حوالہ سے اقدامات کریں، لاک ڈاون سے بیروزگارہونے والے افراد کو امداد اور بنیادی سہولیات دی جائیں اورچھوٹے ودرمیانہ درجہ کے کاروباروں (ایس ایم ایز) کووسائل فراہم کیے جائیں تو عالمی اقتصادی بحالی کے عمل میں نمایاں تیزی لانا ممکن ہے۔

گزشتہ ماہ کے وسط میں ائی ایم ایف نے نے پاکستان سمیت 76 ممالک کے 40 ارب ڈالرز کے قرضے ایک سال کے لیے منجمد کرنے کا اعلان کیا تھا تاکہ مذکورہ ممالک کورونا وائرس کے خلاف اقدامات کر سکیں۔

عالمی مالیاتی ادارے نے ایک بیان میں کہا تھا کہ جی 20 ممالک یہ قرضے ایک سال کے لیے منجمد کرنے پر رضا مند ہوگئے ہیں، 40 ارب ڈالرز میں سے 20 ارب ڈالرز کے قرضے سعودی عرب منجمد کرے گا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here