پاکستان اسٹاک ایکسچینج: 17 اپریل کو طے شدہ وقت کے بعد ہونے والا کاروبار جائز قرار

اضافی وقت میں کاروبار آپریشنل خرابی کے باعث ہوا، حصص کی کم تعداد کی ٹریڈنگ اور مارکیٹ کے بڑے حصے کی شمولیت کی وجہ سے کاروبار جائز تھا : پاکستان اسٹاک ایکسچینج

250

کراچی : پاکستان سٹاک ایکسچینج میں جمعہ 17 اپریل 2020 کو کاروبار طے شدہ وقت کے اختتام کے 195 سیکنڈ بعد  تک جاری رہا۔

اس بات کا انکشاف بازار حصص کی جانب سے سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کو جمع کروائی گئی ایک رپورٹ میں کیا گیا ہے۔

اضافی وقت میں 34 لاکھ 92 ہزار 550 حصص کا کاروبار ہوا جو کہ حجم کے لحاظ سے دن بھر کے مجموعی کاروبار کا 1.01 فیصد جبکہ مالیت کے اعتبار سے  0.79 فیصد بنتا ہے۔

تاہم پاکستان سٹاک ایکسچینج نے حصص کی کم تعداد کی ٹریڈنگ اورمارکیٹ کے بڑے حصے کی شمولیت کی وجہ سے اضافی وقت میں ہونے والے کاروبار کو جائز قرار دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے:

مندی کی صورت میں اسٹاک مارکیٹ بند کرنا فائدہ مند یا نقصان دہ؟

چینی کمپنی نے پیرو کی بندرگاہ کے بڑے ٹرمینل کے 60 فیصد حصص خرید لیے

آئی ایم ایف نے پاکستان سمیت 76 ممالک کے قرضے ایک سال کیلئے منجمد کردئیے

پاکستان سٹاک ایکسچینج کی پریس ریلیز میں اس چیز کو آپریشنل خرابی قرار دیتے ہوئے وضاحت کی گئی ہے کہ اس کا ذمہ دار پہلی دفعہ متعارف کروایا جانے والا ’اپر مارکیٹ ہالٹ‘ اور گھر سے کام کرنے کی وجہ سے پیش آنے والے مسائل ہوسکتے ہیں۔

پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ سسٹم کو چلانے کے لیے انسانی طور پر کچھ امور انجام دینے پڑتے ہیں مگر کورونا کے باعث گھر سے کام کی پالیسی کے باعث ان امور کی انجام دہی میں تاخیر کا سامنا کرنا پڑا۔

April 17, 2020    1:00 PM

April 17, 2020    1:01 PM

KSE 100

32,809.43

32,818.87

Volume

200,619

239,273

واضح رہے کہ جمعہ 17 اپریل کو پاکستان ایکسچینج  میں تاریخی تیزی دیکھی گئی تھی جس کے باعث کاروبار کو ایک گھنٹے کے لیے روکنا پڑا تھا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here