آئی ایم ایف کی جانب سے 1.4 ارب ڈالر امداد کی منظوری کے بعد روپے کی قدر میں بہتری

326

کراچی: عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی جانب سے پاکستان کے لیے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے 1.4 ارب ڈالر کی مالی معاونت کی منظوری کے مثبت اثرات پاکستان کی کرنسی پر نظر آنا شروع ہو گئے ہیں اور ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں 2.6 روپے یعنی 1.5 فیصد بہتری آئی ہے۔

کاروباری ہفتے کے آخری روز ڈالر روپے کے مقابلے میں 164 سے 164.5 روپے تک آ گیا۔ انٹربینک میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں روپیہ شروع میں غیرمستحکم نظر آیا اور ایک ڈالر 166.95 روپے میں فروخت ہوتا رہا۔

یہ بھی پڑھیے:

آئی ایم ایف نے پاکستان سمیت 76 ممالک کے قرضے ایک سال کیلئے منجمد کردئیے

تاریخی لاک ڈائون کے باعث عالمی معیشت کی شرح نمو میں 3 فیصد گراوٹ متوقع

کوروناوائرس: جرمنی، فرانس، امریکا، برطانیہ کی معیشتیں بد ترین کساد بازاری کے دہانے پر

تاہم آئی ایم کی جانب سے پاکستان کے لیے 1.4 ارب ڈالر امداد کی منظوری کی خبر آنے کے بعد روپے کی قدر میں بتدریج بہتری آگئی۔

آئی ایم ایف یہ امداد کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے دے رہا ہے۔ امداد کا فیصلہ آئی ایم ایف کی ایگزیکٹو بورڈ کمیٹی کے ایک اجلاس میں کیا گیا، پاکستان کے لیے 1.4 ارب ڈالر کی مالی معاونت کا مقصد غیرملکی زرِمبادلہ ذخائر میں اضافہ اور بجٹ کی تیاری میں معاوت کرنا ہے۔

حکومت کی جانب سے گزشتہ ماہ آئی ایم ایف سے ایف آر آئی (Rapid Financing Instrument) فنڈز کے تحت کورونا وائرس کے منفی اثرات کو زائل کرنےک لیے کم لاگت کے لیے تیزی سے تقسیم کرنے والے قرضے کی درخواست کی گئی تھی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here