کورونا سے نبرد آزما ہسپتالوں کو قرضوں کیلئے سٹیٹ بینک کی مزید لچک

303

کراچی: کورونا وائرس کی وباء پھیلنے کے بعد بینک دولت پاکستان معیشت کو تقویت دینے کے لیے کئی اقدامات کرچکا ہے۔

پیر کو جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق اسٹیٹ بینک کا ایک ابتدائی قدم اس وبائی بیماری کا مقابلہ کرنے میں پیش پیش اسپتالوں کو مدد فراہم کرنا تھا۔

اس کے لیے 17 مارچ 2020 کو اسٹیٹ بینک کی ری فنانس فیسلٹی ٹو کمباٹ کووڈ (آر ایف سی سی) 19 کے ذریعے اسپتالوں کو اپنی مالی ضروریات پوری کرنے کے لیے سہولت مہیا کی گئی۔

اس کے بعد سے اسٹیٹ بینک کو اسے مزید بہتر بنانے کے لیے مختلف تجاویز موصول ہوئی ہیں۔ ان تجاویز کو مدنظر رکھتے ہوئے اسٹیٹ بینک نے آر ایف سی سی کے تحت شعبہ صحت کو مزید سہولت دینے کے لیے مزید لچک فراہم کی ہے۔

کورونا وائرس کی وباء کے خلاف کام کرنے والے اسپتالوں اور طبی مراکز کو اب اپنے موجودہ آلات اور ری فربش آلات کی خریداری کے عوض بھی فنانسنگ حاصل کرنے کی اجازت ہوگی بشرطیکہ یہ آلات کورونا وائرس سے نمٹنے کی خصوصی سہولت آئسولیشن وارڈکی تعمیرمیں استعمال کی جائیں۔

مزیدیہ کہ علیحدہ آئسولیشن فیسلٹی قائم کرنے کے لئے سول ورکس کی زیادہ سے زیادہ 60 فیصد کوریج کو بھی بڑھا کر 100 فیصد کردیا گیا ہے۔

بینکوں کو اس امر کو یقینی بنانے کی ہدایت کی گئی ہے کہ اس سہولت کے تحت دی جانے والی فنانسنگ اسی مقصد کے لیے استعمال کی جائے۔

توقع ہے کہ ان تبدیلیوں سے اسپتالوں طبی مراکزکواسٹیٹ بینک کے ری فنانس سہولت کوزیادہ آسانی سے استعما ل کرنے میں مدد ملے گی۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here