حکومت نے ادویات کی سپلائی کو سنجیدہ نہ لیا تو بحران پیدا ہو سکتا ہے، فارما بیورو

168

اسلام آباد: فارما بیورو نے ادویات کی مینوفیکچرنگ اور سپلائی یقینی بنانے کے لیے حکومت سے بغیر رکاوٹ کےادویات اور فارما ملازمین کی آزادانہ نقل و حمل کی درخواست کی ہے۔ 

ترجمان فارما بیورو نے کہا ہے کہ “کورونا وائرس پھیلنے سے روزمرہ کی زندگی متاثر ہوئی ہے، افسوسناک بات یہ ہے کہ دیگر معاملات کے علاوہ لاک ڈاؤن نے ادویات کی فراہمی پر بھی اثر ڈالا ہے جو ان حالات میں سب سے زیادہ ضروری ہے۔

یہ بات معلوم ہوئی ہے کہ  بہت سی دوا ساز کمپنیوں کو پاکستان بھر میں میڈیکل سٹورز میں دوائیں پہنچانا مشکل ہو رہا ہے کیونکہ متعلقہ حکام ٹرانسپورٹرز کو لاک ڈاؤن کے باعث آزادنہ  نقل و حمل کی اجازت نہیں دے رہے”۔

یہ بھی پڑھیے:

چینی کمپنی کا کورونا وائرس کے خلاف موثر کیپسول بھاری مقدار میں پاکستان ، افغانستان اور ایران کو عطیہ

پنجاب میں کورونا وائرس کے سندھ سے زیادہ مریض، ملک بھر میں50 نئے کیسز رپورٹ، تعداد 1415 ہو گئی

کورونا وائرس کیخلاف اقدامات: نیشنل ڈیزاسٹرمینجمنٹ اتھارٹی کےلیے پانچ ارب کی ضمنی گرانٹ منظور

انہوں نے کہا کہ فارما ملازمین کو دفاتر میں جانے کے لیے روکا جا رہاہے اور اس سے ادویات کی پیداوار اور سپلائی متاثر ہونے کا امکان ہے۔

اس امر کو سنجیدہ لینے کی ضرورت تھی اور متعلقہ حکام کو ڈرگز ٹرانسپورٹرز کو آزادانہ کام کرنے کی واضح ہدایات کرنا چاہیے تھیں۔

ترجمان فارما بیورو نے خبردار کیا کہ ادویات کی عدم دستیابی موجودہ حالات میں ایک سنگین مسئلہ میں تبدیل ہو سکتی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here