سرجیکل ماسکس، سینیٹائزر سمیت سات قسم کی طبی مصنوعات کی برآمد پر پابندی عائد

66

اسلام آباد: پاکستان میں کورونا وائرس کے بڑھتے ہوے کیسز کی وجہ سے وفاقی حکومت نے طبی سامان کی قلت سے بچنے کے لیے سرجیکل ماسکس، ہینڈ سینٹائزرز، گوگلز اور دیگر سات اشیاء کی برآمد پر پابندی عائد کر دی ہے۔

پرافٹ اردو کے نمائندے کے پاس دستیاب نوٹی فکیشن کاپی کے مطابق “وفاقی حکومت نے درآمدات اور برآمدات (کنٹرول) ایکٹ 1950 کے سیکشن 3 کے سب سیکشن (1) کے تحت سرجیکل ماسکس، ہینڈ سینٹائزرز، گوگلز، ٹائوک سوٹس، ڈسپوزایبل گائونز کے علاوہ گلوز، فیس شیلڈ، N95 ماسکس، بائیو ہیزرڈ بیگز اور شوکورز کی برآمد پر پابندی عائد کر دی ہے”۔

نوٹی فکیشن میں کہا گیا ہے کہ ملک میں بنیادی میڈیکل آلات کی ضروریات اور ان ذخائر کی نشاندہی کے جائزے کے عمل کے مکمل ہونے کے بعد یہ پابندی ختم ہوجائے گی۔

یہ بھی پڑھیے:

کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے 61 قسم کے طبی آلات کی درآمد پر ٹیکس ختم

کورونا کی وجہ سے کاروبار بند، حکومت تین ماہ کیلئے بجلی، گیس کے بل معاف کرے

پیاز کی برآمدات پر بھی پابندی:

اس کے علاوہ وزارتِ تجارت نے پیاز کی برآمدات پر پابندی عائد کرنے کا نوٹی فکیشن جاری کر دیا ہے۔ “وفاقی حکومت نے درآمدات اور برآمدات (کنٹرول) ایکٹ 1950 کے سیکشن 3 کے سب سیکشن (1) کے تحت پیاز کی برآمدات پر پابندی عائد کی گئی، پابندی کا اطلاق 31 مئی 2020 تک ہو گا”۔

یہ بھی پڑھیے:

سٹیٹ بنک آف پاکستان کے برآمدات کے فروغ کے لیے اہم فیصلے

کورونا وائرس، وفاقی حکومت کا ریلیف پیکج،70 لاکھ مزدوروں کو ماہانہ تین ہزار دینے کا اعلان

حکام کا کہنا ہے کہ پیازکی برآمد پر پابندی میں توسیع کا فیصلہ پیاز کی قیمتوں میں استحکام کے لیے کیاگیا ہے۔

یاد رہے کہ اقتصادی رابطہ کمیٹی نے پیاز کی ایکسپورٹ پر پابندی کا فیصلہ کیا تھا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here