رواں مالی سال کے آٹھ ماہ میں ایک ہزار سی سی کاروں کی پیداوار اور فروخت میں واضح کمی

137

اسلام آباد: ملک میں ایک ہزار سی سی کاروں کی پیداوار اور فروخت میں جاری مالی سال کے آٹھ ماہ کے  دوران گزشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے مقابلہ میں کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

آل پاکستان آٹوموٹیو مینو فیکچررز ایسوسی ایشن کے اعدادوشمار کے مطابق جولائی 2019ء سے لے کر فروری 2020ء تک کے عرصہ میں ملک میں ایک ہزار سی سی کاروں کے16163 یونٹس کی پیداوار اور15657 یونٹس کی فروخت ریکارڈ کی گئی ۔

یہ شرح گذشتہ مالی سال کے اسی عرصہ کے مقابلہ میں 120.65فیصد کم ہے، گذشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں ملک میں ایک ہزار سی سی کے 33769 یونٹس کی پیداوار جبکہ 36385 یونٹس کی فروخت ریکارڈ کی گئی تھی۔

فروری کے مہینہ میں ملک میں  ایک ہزار سی سی کے 1158 یونٹس کی پیداوار اور2234 یونٹس کی فروخت ریکارڈ کی گئی تھی۔

یہ بھی پڑھیے:

Audi نے بجلی سے چلنے والی کار پاکستان میں متعارف کروادی

انڈس موٹرز کمپنی نے پاکستان میں ٹویوٹا یارس لانچ کر دی

ناروے میں فروخت کردہ ایک تہائی نئی گاڑیاں مکمل طور پر الیکٹرک کاریں

الیکٹرک وہیکلز پالیسی بن گئی، لیکن کیا پاکستان میں بجلی پر گاڑیاں چلانے کا منصوبہ کامیاب ہو پائے گا؟

مستقبل میں کاریں بجلی پر چلیں گی، وزیر اعظم عمران خان ای کاریں متعارف کرانے میں سنجیدہ نظر آتے ہیں

 اعدادوشمار کے مطابق مالی سال کے ابتدائی آٹھ ماہ میں سوزوکی کلٹس کے 9845 یونٹس کی پیداوار  9222 یونٹس کی پیداوار ریکارڈ کی گئی،  گزشتہ مالی سال کے اسی مدت میں کلٹس کے16097یونٹس کی پیداوار اور14785 یونٹس کی فروخت ریکارڈ کی گئی تھی۔

اسی عرصہ میں سوزوکی ویگن آر کے6941 یونٹس کی پیداوار اور5812  یونٹس کی فروخت ریکارڈ کی گئی، گذشتہ مالی سال کے اسی عرصہ میں ملک میں  ویگن آر کے 23672  یونٹس کی پیداوار اور21600 یونٹس کی فروخت ریکارڈ کی گئی۔

واضح رہے کہ رواں مالی سال 2019-20 کے پہلے آٹھ ماہ (جولائی تا فروری) کے دوران موٹر سائیکلوں اور تھری وہیلرز کی فروخت میں 9.86 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

پاکستان آٹو موبائل مینوفیکچرنگ ایسوسی ایشن (PAMA) کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے آٹھ ماہ کے دوران ملک میں دس لاکھ 80 ہزار 272 موٹر بائیکس اور تھری وہیلرز فروخت ہوئیں جبکہ مالی سال 2019ء میں یہ تعداد گیارہ لاکھ 97  ہزار 222 تھی۔

اسی طرح جولائی 2019 سے فروری 2020 تک گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں پاکستان میں  زرعی ٹریکٹروں کی پیداوار اور فروخت میں 56 فیصد جبکہ ٹرکوں اور بسوں کی پیداوار و فروخت میں 77 فیصد کمی  ریکارڈ کی گئی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here