آٹھ ماہ کے دوران ترسیلات زر میں 5.4 فیصد اضافہ، سمندر پار پاکستانیوں نے 15.1ارب ڈالر بھجوائے

جنوری 2020ء کی نسبت فروری میں سعودی عرب سے ترسیلات زر میں 2.6 فیصد، متحدہ عرب امارات سے 2.1 فیصد، امریکا سے 0.5 فیصد اور برطانیہ سے 15.2 فیصد کمی ہوئی ہے: سٹیٹ بینک

115

کراچی: رواں مالی سال کے آٹھ ماہ (جولائی تا فروری)کے دوران بیرون ممالک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے ترسیلات زر میں گزشتہ مالی سال کے اتنے ہی عرصہ کی نسبت 5.4 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

جولائی تا فروری سمندر پار پاکستانیوں نے 15126ملین ڈالر (15.1ارب ڈالر) کی رقوم پاکستان بھیجیں جو مالی سال 2018-19 کے ابتدائی آٹھ ماہ (جولائی تا فروری)میں بھیجی جانے والی رقوم 14355 ملین ڈالر سے 770.7 ملین ڈالر زیادہ ہیں، یوں آٹھ ماہ کے دوران ترسیلات زر میں 5.4 فیصد اضافہ ہوا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:

ای سی سی کا اجلاس: بینک اکاؤنٹس میں منتقل کردہ ترسیلات زرپر وِد ہولڈنگ ٹیکس ختم کرنے کی منظوری

ترسیلات زر میں اضافہ پاکستانی بینکوں کیلئے مثبت ، زرمبادلہ کے ذخائر مستحکم ہونگے: موڈیز کی رپورٹ

پاکستان ترسیلات زر موصول کرنے والے خطے کے 5 بڑے ممالک میں شامل

سٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق فروری 2020 میں سمندر پار پاکستانیوں نے 1824.3 ملین ڈالر وطن میں بھجوائے جو کہ فروری 2019ء میں بھجوائے گئے 1581.8 ملین ڈالر سے 242.5 ملین ڈالر زیادہ ہیں، یوں سالانہ بنیادوں پر ترسیلات زر میں 15.3 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔

تاہم ماہانہ بنیادوں پر ترسیلات زر میں 4.4 فیصد کمی دیکھی گئی ہے، فروری 2020 میں جنوری کی نسبت پاکستان کو کم ترسیلات زر موصول ہوئیں اور یہ رجحان عالمی سطح پر بھی دیکھا گیا کیونکہ فروری میں زیادہ تر ممالک کی ترسیلات زر میں کمی آئی۔

فروری میں سعودی عرب میں مقیم پاکستانیوں نے 421.96 ملین ڈالر، متحدہ عرب امارات سے 387.1ملین ڈالر، امریکا سے 333.5 ملین ڈالر اور برطانیہ سے 253.5 ملین ڈالر بھجوائے یوں جنوری 2020ء کی نسبت فروری میں سعودی عرب سے ترسیلات زر میں 2.6 فیصد، متحدہ عرب امارات سے 2.1 فیصد، امریکا سے 0.5 فیصد اور برطانیہ سے 15.2 فیصد کمی ہوئی ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here