انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن کا ون لوڈ میں سرمایہ کاری کرنے کا اعلان

194

اسلام آباد: لاکھوں پاکستانی ایسے ہیں جو ڈیجیٹل ورلڈ تک رسائی حاصل کرنے کے خواہاں ہیں۔ ان کے لیے ون لوڈ ایک زبردست ریٹیلر ایپ ہے جس نے متعدد ٹیلی کام اور بنکنگ سروسز کو آپس میں یکجا کر دیا ہے۔ یہ تصور ٹیکنالوجی انٹراپرینیور محمد یار ہراج کا ہے جنہوں نے پاکستان کی نمایاں ٹیکنالوجی سروسز کمپنی سسٹمز لمیٹڈ کے ساتھ شراکت داری سے یہ ایپ بنائی ہے۔ یہ ایپ تین برس قبل لانچ کے بعد سے اب تک ڈیڑھ کروڑ سے زیادہ صارفین کو بنکنگ کی سہولیات فراہم کر چکی ہے اور ملک بھر میں اسے 32 ہزار سے زیادہ فعال ریٹیلرز روزانہ استعمال کرتے ہیں۔

مزید پڑھیں:

سادہ پے، ایک اور موبائل والٹ، مقامی بنکنگ سیکٹر کو چیلنج کرنے کے لیے تیار

ای پے، پانچ ماہ میں ایک ارب سے زیادہ ریونیو جمع کرنے میں کامیاب

ون لوڈ محلے کے ریٹیلز کے ذریعے عوام کی ڈیجیٹل ورلڈ تک رسائی کا ایک ذریعہ ہے۔ کمپنی تیزی کے ساتھ اپنی ریٹیلرشپ بڑھا رہی ہے اور بہت سی معاشی سروسز کو یکجا کر رہی ہے جن میں ایزی پیسہ، جاز کیش اور دیگر بنکنگ سروسز شامل ہیں (جیسا کہ کیش ڈیپازٹ کروانا اور نکلوانا، رقوم کی ٹرانسفرز اور بنک میں اکائونٹ کھلوانا وغیرہ) تاکہ ریٹیلر کے لیے کم از کم ابتدائی سرمایہ کاری کے ساتھ زیادہ سے زیادہ آمدن کا حصول ممکن ہو سکے۔ ون لوڈ کے ڈیجیٹل اکانومی میں کردار اور اس کے بزنس ماڈل کا حال ہی میں انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن کی جانب سے اعتراف کیا گیا ہے جس نے کمپنی میں سرمایہ کاری کا اعلان کیا ہے، یہ ادارہ ورلڈ بنک گروپ کا رُکن ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here