مختلف وزارتوں ،ڈویژنوں کے ترقیاتی منصوبوں کیلئے اب تک 4 کھرب 64 ارب سے زائد کے فنڈز جاری

119

اسلام آباد: وزارت منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات نے سرکاری شعبے کے ترقیاتی کاموں کے سلسلے میں مختلف وزارتوں اور ڈویژنوں کے ترقیاتی منصوبوں کے لئے مجموعی طور پر اب تک 4 کھرب 64 ارب 70کروڑ 64 لاکھ روپے سے زیادہ کے فنڈز جاری کئے ہیں، حکومت نے سرکاری شعبے کے ترقیاتی کاموں کے لئے رواں مالی سال کے لئے 9 کھرب 25 ارب روپے کے فنڈز مختص کر رکھے ہیں۔

 پلاننگ کمیشن کے اعداد وشمار کے مطابق حکومت نے خیبر پختونخوا میں ضم شدہ اضلاع کے 10سالہ ترقیاتی پلان کے تحت 23 ارب، خیبر پختونخوا میں ضم شدہ اضلاع کے لئے 9 ارب 68 کروڑ31لاکھ، سکیورٹی میں اضافے کے لئے 38 ارب45 کروڑ روپے جاری کیے گئے ہیں۔

 پرائم منسٹر یوتھ ہنر مند پروگرام کے لئے ایک ارب51 کروڑ 62 لاکھ، ایرا کے لئے 3 ارب 42کروڑ 51 لاکھ، عارضی طور پر بے گھر ہونے والے افراد کی بحالی کے لئے 5 ارب، گلگت بلتستان بلاک کے لئے 13ارب 4کروڑ، اے جے کے بلاک کے لئے21 ارب 16 کروڑ، این ایچ اے کے لئے ایک کھرب 45 ارب روپے کے فنڈز جاری ہوئے ہیں۔

اسی طرح وفاقی حکومت نے  نیشنل ٹرانسمشن اینڈ ڈسپیچ  کمپنی (این ٹی ڈی سی )(پیپکو) کے لئے12 ارب61 کروڑ، آبی وسائل ڈویژن کے لئے 52 ارب 60 کروڑ، ٹیکسٹائل انڈسٹری ڈویژن کے لئے8کروڑ 11 لاکھ اور سائنس اینڈ ٹیکنالوجیکل ریسرچ ڈویژن کے لیے 2 ارب11کروڑ،  روپے جاری کیے ہیں۔

ریونیو ڈویژن کے لئے 4 ارب24 کروڑ، ریلویز ڈویژن کے لئے 10 ارب14 کروڑ، پاورٹی ڈویژن کے لئے 8 کروڑ، پلاننگ کمیشن کے لئے 93 کروڑ 16 لاکھ، پٹرولیم ڈویژن کے لئے 29کروڑ 32 لاکھ، پاکستان نیوکلیئر اتھارٹی کے لئے22 کروڑ94 لاکھ، قومی تاریخ وادبی ورثہ ڈویژن کے لئے12 کروڑ48 لاکھ ، ملک میں صحت کی سہولیات بہتر بنانے کے لئے7 ارب 13 کروڑ، نیشنل فوڈ سکیورٹی ریسرچ ڈویژن کے لئے 8 ارب 16کروڑ روپے کے فنڈز جاری کیے گئے۔

یہ بھی پڑھیے:

پاکستان سٹیل ملز کی بحالی کے لیے 50 ارب روپے کے فنڈز جاری کرنے کی تجویز

دوردراز علاقوں میں ٹیلی کام سروسز کی فراہمی پر 21 ارب روپے کے فنڈز خرچ

فنڈز میں کروڑوں کی خردبرد، قومی بچت سکیم کے 4 ملازمین کے خلاف کیس دائر

نارکوٹکس ڈویژن کنٹرول کے لئے 5 کروڑ 85 لاکھ، میری ٹائم افیئرڈویژن کے لئے 54 کروڑ 72 لاکھ، لاء جسٹس ڈویژن کے لئے 64 کروڑ 91 لاکھ، داخلہ ڈویژن کے لئے 6 ارب8 کروڑ 71 لاکھ، بین الصوبائی رابطہ ڈویژن 22 کروڑ 22 لاکھ، انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی کام ڈویژن کے لئے 3 ارب 1کروڑ، انفارمیشن اینڈ براڈکاسٹنگ ڈویژن کے لئے 20 کروڑ 84 لاکھ، صنعت وپیداوار ڈویژن کے لئے73کروڑ19 لاکھ روپے کے فنڈز جاری ہوئے ہیں۔

 انسانی حقوق ڈویژن کے لئے 12کروڑ70 لاکھ، ہائوسنگ اینڈ ورکس ڈویژن کے لئے 2 ارب 22 کروڑ، ہائر ایجوکیشن کمیشن کے لئے 22ارب 70 کروڑ 99 لاکھ، فارن افیئرز ڈویژن ایک کروڑ 99 لاکھ، فنانس ڈویژن کے لئے 6 ارب 83 کروڑ، وفاقی تعلیم و پیشہ وارانہ تربیت ڈویژن کے لئے 2 ارب 19کروڑ، اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کے لئے 10 کروڑ 19 لاکھ روپے اب تک جاری کیے گئے ہیں۔

اس کےعلاوہ  دفاعی پیدوار  ڈویژن کے لئے ایک ارب 36 کروڑ، ڈیفنس ڈویژن کے لئے 25 کروڑ 15 لاکھ، کمیونیکیشن ڈویژن کے لئے 15 کروڑ 3 لاکھ، موسمیاتی تبدیلی ڈویژن کے لئے 6 ارب 4 کروڑ، کامرس ڈویژن کے لئے 5 کروڑ، کابینہ ڈویژن کے لئے 30 ارب 17 کروڑ57 لاکھ، سرمایہ کاری بورڈ کے لئے8کروڑ، ایوی ایشن ڈویژن کے لئے ایک ارب 64کروڑ 18 لاکھ روپے سمیت مختلف ترقیاتی منصوبوں کے لئے فنڈز جاری کردیئے گئے ہیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here