کپاس کی پیداوار میں 8.54 ملین گانٹھوں کی کمی

406

لاہور: یکم فروری سے 15 فروری کے دوران ملک بھر سے کپاس کی 8.547 ملین گانٹھیں جننگ انڈسٹریز میں پہنچی ہیں، گزشتہ برس اسی عرصہ کے دوران یہ تعداد 10.7 ملین گانٹھوں پر مشتمل تھی۔

پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے) کی جانب سے جاری کیے گئے اعداد و شمار کے مطابق، اس عرصہ کے دوران 2.153 ملین گانٹھوں میں کمی آئی ہے اور یہ تناسب 20.12 فی صد بنتا ہے۔

مزید پڑھیں: کپاس کی پیداوار بڑھانے کے لیے وزیراعظم کا ایمرجنسی پروگرام متعارف

پنجاب میں 15 فروری تک کپاس کی پانچ اعشاریہ 73 ملین گانٹھیں جننگ انڈسٹریز پہنچیں جو گزشتہ برس کی نسبت 22.56 فی صد کم ہیں (چھ اعشاریہ 55 ملین گانٹھیں)۔

اسی طرح، اس عرصہ کے دوران سندھ کی جننگ انڈسٹریز میں پہنچنے والی گانٹھوں کی تعداد 3.473 ملین تھی اور گزشتہ برس اسی عرصہ کے دوران ان گانٹھوں کی تعداد 4.148 ملین تھی جو 16.26 فی صد کمی کو ظاہر کرتی ہیں۔

مزید پڑھیں: کپاس کی پیدوار 20 فیصد کم، جننگ انڈسٹری کو 2.18 ملین بیلز شارٹ فال کا سامنا

پی سی جی اے کے ایک عہدیدار نے اس رپورٹر سے بات کرتے ہوئے کہا، ملک بھر میں 15 فروری تک جننگ انڈسٹریز میں مجموعی طور پر 8.250 ملین گانٹھیں ہی پہنچی ہیں۔

اعداد و شمار کے مطابق، کپاس کی ان گانٹھوں میں سے ٹیکسٹائل سیکٹر نے 7.795 ملین گانٹھیں خریدی ہیں جب کہ 0.059 ملین گانٹھیں ایکسپورٹرز نے خرید لی ہیں۔

ٹریڈنگ کارپوریشن نے کپاس کے سیزن 20-2019 کے دوران کپاس کی کوئی گانٹھ نہیں خریدی۔

اس عرصہ کے دوران 71 جننگ انڈسٹریز آپریشنل رہی ہیں۔ مجموعی جننگ انڈسٹریز میں سے 62 پنجاب میں ہیں جو پانچ اعشاریہ 49 ملین گانٹھیں پروڈیوس کر رہی ہیں۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here