آئی ٹی کی برآمدات 10 ارب ڈالر تک لے جانے، اسلام آباد میں 40 ایکٹر پر سافٹ وئیر سٹی بنانے کا فیصلہ

وزیر اعظم کی زیر صدارت آئی ٹی سے متعلق اہم اجلاس، فری لانسرز کیلئے بیرونی ترسیلات زر 25 ہزار ڈالر ماہانہ کرنے، سافٹ وئیر ایکسپورٹرز کو ٹیکس ریلیف دینے کا فیصلہ

104

اسلام آباد: وفاقی حکومت نے آئی ٹی سے متعلق برآمدات کو 10 ارب ڈالر تک لے جانے ،چھوٹے سافٹ وئیر ایکسپورٹرز کو ٹیکس ریلیف دینے اور اسلام آباد میں 40 ایکٹر پر سافٹ وئیر سٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت انفارمیشن ٹیکنالوجی سے متعلق اجلاس میں پاکستان کی آئی ٹی اور سافٹ ویئر ایکسپورٹس میں اضافے سمیت ملک بھر میں آئی ٹی کا نیٹ ورک وسیع کرنے سے متعلق اہم فیصلے کیے گئے۔

اجلاس کے دوران ٹیلی فون ٹاورزکے ذریعے شہروں کی ڈیجیٹلائزکنیکٹویٹی شروع کرنے کی منظوری دی گئی ہے جبکہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ بینڈ وڈتھ اور فائیبرآپٹک کا عمل فوری مکمل کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: وزیراعظم کی جرمن سافٹ وئیر کمپنی کو ’ڈیجیٹل پاکستان‘ میں سرمایہ کاری کی دعوت

اجلاس میں ملک کی سافٹ ویئرایکسپورٹس کو10 ارب  ڈالرز تک لے جانے اور چھوٹے سافٹ وئیرایکسپورٹرز کےلیے ریلیف پیکج متعارف کرانے کا فیصلہ کیا گیا ۔

وزیر اعظم عمران خان آئی ٹی سے متعلق اہم اجلاس کی صدارت کر رہے ہیں

لوکل سافٹ وئیر کمپنیوں کو سافٹ وئیر سٹی میں سہولتیں دی جائیں گی تاکہ زیادہ سے زیادہ مقامی کمپنیاں مقامی طور پر تیار شدہ سافٹ ویئرخریدیں۔

یہ بھی پڑھیں: کیا آئی ٹی یو پاکستان کی ایم آئی ٹی بن سکتی ہے؟

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ صوبوں اور وفاق کی جانب سے عائد ڈبل ٹیکس ختم کر دیا جائے گا اور ایکسپورٹرز کو ڈالر کا ایکسچینج ریٹ مارکیٹ سے بہتر دیا جائے گا۔

وزیرِ اعظم نے  اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آئی ٹی ملک کا مستقبل ہے لہٰذا اسکا فروغ حکومت کی اولین ترجیح ہے،  پاکستان کے نوجوانوں میں آئی ٹی سیکٹر میں بے پناہ صلاحیت موجود ہے، حکومت آئی ٹی سیکٹر میں قابل نوجوانوں کی ہر ممکن طریقے سے سہولت کاری کے لئے پرعزم ہے۔

یہ بھی پڑھیں: پاکستان میں ایک بھی ملین ڈالر سافٹ وئیر کمپنی نہیں! لیکن ملئے ایسے شخص سے جو اس تصور کو بدل رہا ہے

عمران خان نے مزید کہا کہ فری لانسرز کی سہولت کاری اور ان کو مراعات فراہم کرنا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہیں جبکہ آئی ٹی سیکٹر کے فروغ سے شعبے سے وابستہ لاکھوں نوجوانوں کو اپنی صلاحیتیں برؤے کار لانے اور نوکریوں کے مواقع میسر آئیں گے۔

اس موقع پر سیکرٹری انفارمیشن ٹیکنالوجی شعیب صدیقی نے وزیراعظم کو آئی ٹی کے شعبے میں اٹھائے جانے والے اقدامات کے بارے میں بریفنگ دی۔

انہوں نے بتایاکہ ہنر مند نوجوان فری لانسرز کو مراعات ، آئی ٹی کی برآمدات میں اضافےکیلئے ٹیکس میں چھوٹ، نوجوانوں کو آسان قرضوں کی فراہمی جیسی سہولتیں دے رہے ہیں۔ بیرون ملک سے رقوم کی ترسیل کیلئے ای پیمنٹ کا طریقہ کار اپریل تک مکمل نافذ کردیں گے۔

سٹیٹ بینک کے نمائندے نے وزیراعظم کو بریفنگ میں بتایا کہ فری لانسرز کے لیے غیر ملکی ترسیلاتِ زر کی حد بڑھا کر 25 ہزار ڈالر ماہانہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس پر عملدرآمد 2 روز میں شروع ہو جائے گا۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here