آم کی قومی برآمدات ایک لاکھ ٹن سے تجاوز کر گئیں

217

اسلام آباد: 8 سال کے بعد آم کی قومی برآمدات ایک لاکھ ٹن سے تجاوز کر گئی ہیں‘ توقع ہے کہ رواں ماہ ستمبر کے اختتام تک برآمدی سیزن ختم ہونے تک برآمدات ایک لاکھ 20ہزار ٹن تک بڑھ جائیں گی۔ بزنس مین پینل کے سیکرٹری جنرل اور وفاق ہائے صنعت و تجارت پاکستان (ایف پی سی سی آئی) کی قائمہ کمیٹی برائے ہارٹی کلچر ایکسپورٹ کے مطابق چیئرمین چوہدری احمد جواد نے کہا ہے کہ گزشتہ سال 80 ہزار ٹن آم برآمد کیا گیا تھا تاہم رواں سال آم کے برآمدی سیزن میں برآمدات ایک لاکھ ٹن سے بڑھ چکی ہیں اور وقع ہے کہ ستمبر 2019ء کے اختتام پر جب آم کا برآمدی سیزن ختم ہو گا تو برآمدات ایک لاکھ 20 ہزار ٹن تک پہنچ جائیں گی۔
انہوں نے کہا کہ ان برآمدات میں ایران اور افغانستان وغیرہ کو کی جانے والی غیر سرکاری برآمدات شامل نہیں ہیں۔
احمد جواد نے کہا کہ مالی سال 2011-12ء کے دوران آم کی برآمدات ایک لاکھ ٹن سے زائد رہی تھیں جس کے بعد برآمدات میں کمی کا رحجان رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آٹھ سال کے بعد آم کی برآمدات کا حجم ایک لاکھ ٹن سے بڑھنا حوصلہ افزا ہے۔ احمد جواد نے کہا کہ آم کی برآمدات کے فروغ کے لئے اندرون ملک اور عالمی سطح پر کاروباری آسانیوں کی فراہمی یقینی بنانے کی ضرورت ہے انہوں نے کہا کہ غیر ملکی فضائی کمپنیاں بھارت کے مقابلہ میں پاکستانی آم کی برآمدات پر 20 فیصد زائد کرائے حاصل کررہی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ رواں سیزن میں درجہ حرارت میں اضافہ سے بعض مشکلات کا سامنا رہا ہے اس حوالے سے کولڈ سٹوریج کی سہولیات میں اضافہ کے ساتھ ساتھ پراسیسنگ کی جدید ترین ٹیکنالوجی کی فراہمی سے برآمدات میں نمایاں اضافہ کے ذریعے قیمتی زرمبادلہ کما کر دیہی معیشت کی ترقی کے اہداف کے حصول کو بھی یقینی بنایا جاسکتا ہے۔

جواب چھوڑیں

Please enter your comment!
Please enter your name here